گلگت بلتستان کے برف پوش پہاڑ دنیا میں سب سے منفرد

گلوبل وارمنگ سے گلیشیئرز کو نقصان پہنچ رہا ہے، ماہرین

دنیا بھر میں آج پہاڑوں کا عالمی دن منایا جارہا ہے، یہ دن پہاڑوں کے قریب رہنے والی آبادی کی حالت بہتر بنانے اور قدرتی ماحول کو برقرار رکھنے کے حوالے سے شعور اجاگر کرنے کیلئے منایا جاتا ہے۔

گلگت بلتستان کو پہاڑوں کی سرزمین بھی کہا جاتا ہے، دنیا کے تین عظیم ترین پہاڑی سلسلے کوہ ہمالیہ، کوہ ہندوکش اورکوہ قراقرم یہاں پایا جاتا ہے، گلگت بلتستان کی برف پوش پہاڑ دنیا بھرسے منفرد ہیں، یہاں اکثر لوگوں کا ذریعہ سیاحت سے وابستہ ہے۔

پہاڑوں کا عالمی دن منانے کیلئے گلوف ٹو پراجیکٹ کے زیر اہتمام چترال شہرمیں ایک خصوصی پروگرام کا اہتمام کیا گیا جس میں ماہرین نے خبردار کیا کہ دنیا بھر میں ماحولیاتی تبدیلی کے باعث درجہ حرارت میں تشویشناک اضافہ ہورہا ہے اور زمین کو موسمیاتی تبدیلی کے باعث ہونے والی تباہی سے بچانے کے لیے فوری اقدامات لینے کی ضرورت ہے۔

ماہرین کے مطابق گلوبل وارمنگ نے پہاڑوں کے فطرتی نظام میں اکھاڑ پچھاڑ پیداکردی ہے ان تبدیلیوں سے گلیشرز کی تیزی سے پگھلنے اور پانی کی بہاؤ سے لیکر زراعت، جنگلی حیات اور سیاحت پر بھی منفی اثرات مرتب ہورہے ہیں۔

چترال کا علاقہ بھی گزشتہ چند برسوں سے موحولیاتی تبدیلی کے باعث قدرتی آفات سے دوچار ہے، خصوصاً گلیشیر ز کے پھٹنے اور سیلاب کے زد میں اکر سینکڑوں گھر منہدم، کھڑی فصلیں تباہ اور کروڑوں روپے کے املاک کونقصان پہنچ چکا ہے۔

World mountain day

Tabool ads will show in this div