امریکا: سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کیخلاف جمال خاشقجی قتل کیس خارج

محمد بن سلمان کو ایسے کیسز سے استثنیٰ حاصل ہے، امریکی محکمہ خارجہ

امریکی جج نے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے خلاف صحافی جمال خاشقجی قتل کیس خارج کردیا۔

یورپی میڈیا کے مطابق امریکا میں 6 دسمبر منگل کے روز ایک جج نے مقتول صحافی جمال خاشقجی کی منگیتر خدیجہ چنگیزی کی جانب سے سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان کیخلاف دائر کردہ مقدمے کو مسترد کردیا۔

رپورٹ کے مطابق امریکی ڈسٹرکٹ جج جان بیٹس کا کہنا ہے کہ سعودی ولی عہد کو جمال خاشقجی کیس میں قابل بھروسہ الزامات کے باوجود استثنیٰ حاصل ہے، میرے ہاتھ بائیڈن انتظامیہ کی حالیہ سفارشات کے باعث بندھے ہوئے ہیں۔

یاد رہے کہ سعودی صحافی جمال خاشقجی کو 2018ء میں ترکیہ میں واقع سعودی سفارتخانے میں قتل کردیا گیا تھا اور سعودی صحافی جمال خاشقجی کے قتل کیس کو ان کی منگیتر نے عدالت میں چیلنج کیا تھا۔

برطانوی میڈیا کا کہنا ہے کہ جمال خاشقجی کیس خارج کئے جانے کے بعد سعودی ولی عہد اب آزادانہ امریکا جاسکیں گے۔

امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان کا کہنا تھا کہ جس طرح بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کو امریکہ میں قانونی چارہ جوئی سے تحفظ فراہم کیا گیا تھا، اسی طرز پر سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان کو بھی استثنٰی دیا گیا ہے۔

USA

SAUDIA ARABIA

MOHAMMAD BIN SALMAN

Tabool ads will show in this div