القاعدہ برصغیر اور کالعدم ٹی ٹی پی کے 4 رہنما عالمی دہشت گرد قرار

خیبر پختونخواہ میں دہشتگردوں کا سرغنہ قاری امجد بھی شامل

امریکا نے القاعدہ برصغیر اور کالعدم ٹی ٹی پی کے چار عسکریت پسندوں کو عالمی دہشت گرد قرار دے دیا۔

جمعرات کو امریکی سیکریٹری خارجہ انٹونی بلنکن نے کہا کہ واشنگٹن اس بات کو یقینی بنانے کیلئے پرعزم ہے کہ دہشت گرد گروہ افغانستان کو ایک پلیٹ فارم کے طور پر استعمال نہ کریں۔

انٹونی بلنکن کے مطابق القاعدہ برصغیر اور کالعدم ٹی ٹی پی کے جن رہنماؤں کو عالمی دہشت گرد قرار دیا گیا ہے ان میں ٹی ٹی پی کا نائب امیر قاری امجد بھی شامل ہے جو خیبر پختونخواہ میں دہشتگردی کی کارروائیوں کی نگرانی کرتا ہے، دیگر دہشت گردوں میں القاعدہ برصغیر کا امیر اسامہ محمود، نائب امیر عاطف یحییٰ غوری اور بھرتیوں کا نگران محمد معروف شامل ہے۔

یہ اعلان ٹی ٹی پی کی جانب سے حکومت پاکستان کے ساتھ طے شدہ جنگ بندی کو ختم کرنے اور ملک میں دوبارہ حملے شروع کرنے کے بعد سامنے آیا ہے، دو روز قبل کوئٹہ میں پولیس ٹرک کے قریب خودکش حملے میں 4 افراد شہید ہوگئے تھے جس کی ذمہ داری کالعدم ٹی ٹی پی نے قبول کی تھی۔

بلنکن نے کہا ہم اپنے اس عزم کو برقرار رکھنے کے لیے تمام متعلقہ آلات کا استعمال جاری رکھیں گے کہ بین الاقوامی دہشت گرد افغانستان میں آزادانہ کام کرنے کے قابل نہ ہوں۔

ttp

US Secretary of state

Global Terrorist

AQIS

ANTONY BLINKEN

Tabool ads will show in this div