شان نے ’’دی لیجنڈ آف مولا جٹ‘‘ میں اداکاروں کی پنجابی پر سوال اٹھادیئے

’’دی لیجنڈ آف مولا جٹ‘‘ میں پنجابی زبان کا مخصوص انداز نہیں تھا جو ہونا چاہیے تھا، شان

** اداکار شان نے فلم دی لیجنڈ آف مولا جٹ The Legend of Maula Jatt پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ فلم میں پنجابی زبان کو ٹشو پیپر کی طرح استعمال کیا گیا۔**

اداکاراورہدایت کارشان نے اپنی آنے والی فلم ضرار Zarrar کی پروموشن کے لیے سماء کے پروگرام سپر اوور میں شرکت کی۔ پروگرام میں شان سے ضرار اور شوبز انڈسٹری کے دیگر پہلووں پر بات چیت کی گئی۔

شان نے کسی فنکار کا نام لئے بغیر کہا کہ میرے ذاتی خیال میں فلم دی لیجنڈ آف مولا جٹ میں پنجابی زبان کو ٹشو پیپر سے نہیں پکڑنا چاہیے تھا۔ پنجابی زبان کو پہناوے کی طرح اپنانا چاہیے۔ اگر آپ پنجابی بولنے سے یہ کہتے ہوئے گریز کریں گے کہ مجھے پنجابی نہیں آتی تو پھر آپ اداکار ہی نہیں، کیونکہ ایک اداکار خود کو مختلف زبانوں اور ثقافتوں میں ڈھال لیتا ہے۔ اگر پنجابی فلم کے بجائے انگریزی فلم کی جاتی تو سب کا انداز ہی الگ اور اعلیٰ ہوتا ۔

شان نے کہا کہ یہ اچھی بات ہے کہ اس فلم میں پنجابی زبان بولی گئی اور بہترین بولی گئی مگر میرے مطابق پنجابی زبان کا وہ مخصوص انداز اور رویہ نہیں تھا جو ہونا چاہیے تھا۔

FAWAD KHAN

Punjabi films

shaan shahid

Bilal Lashari

The Legend of Maula Jatt

ZARRAR

PAKISTANI SHOWBIZ

super over samaa tv

Tabool ads will show in this div