سندھ حکومت کا ایچ آئی وی اسکریننگ ٹیسٹ کیلئے موبائل ایپ شروع کرنے کا فیصلہ

اقدام کا مقصد ایچ آئی وی ٹیسٹ کے خواہشمند افراد کی رازداری قائم رکھنا ہے،حکام

حکومت سندھ نے ایچ آئی وی اسکریننگ ٹیسٹ کیلئے موبائل ایپ شروع کرنے کا فیصلہ کرلیا۔

کراچی پریس کلب میں ایچ آئی وی سے متعلق آگہی سیشن سے خطاب میں محکمہ صحت سندھ کے کمیونیکیبل ڈزیز کنٹرول پروگرام کے سربراہ ڈاکٹر ارشاد کاظمی نے کہا کہ ایسے لوگ جو ایچ آئی وی ٹیسٹ کرانا چاہتے ہیں لیکن چاہتے ہیں کہ ان کی شناخت خفیہ رکھی جائے، ایسے افراد بذریعہ موبائل ایپ ٹیسٹ کرواسکتے ہیں۔

ڈاکٹر ارشاد کاظمی نے کہا کہ صحت کے متعلق مضمون نصاب میں شامل کرانے کی بھرپور کوشش کر رہے ہیں تاکہ لوگ کمیونیکیبل ڈزیز سے محفوظ رہ سکیں اور احتیاطی تدابیر بھی اختیار کرسکیں۔

اس موقع پر بتایا گیا کہ یو این ایڈز کی رپورٹ کے مطابق پاکستان میں ایچ آئی وی پازیٹو افراد کا تخمینہ 210000( دو لاکھ دس ہزار) ہے- ڈاکٹر ارشاد کاظمی نے بتایا کہ صوبہ سندھ میں90300 یچ آئی وی پازیٹو افراد میں سے 19766 رجسٹرڈ ہیں ،ان کو حکومت سندھ کی جانب سے مفت علاج فراہم کیا جا رہا ہے۔

ڈاکٹر ارشاد کاظمی نے مزید بتایا کہ عطائی، غیر مستند بلڈ بنک، بذریعہ سرنج نشہ کرنے والے افراد اور سیکس ورکرز ایچ آئی وی پھیلانے کا بڑا ذریعہ ہیں ۔ان کا کہنا تھا کہ بغیر ٹیسٹ خون کے استعمال سے پرہیز ،جنسی تعلق بیوی تک محدود رکھنے ،استعمال شدہ سرنج دوبارہ استعمال نہ کرنے سے ایچ آئی وی کا پھیلاؤ روکا جا سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایچ آئی وی اسکریننگ کا عمل تیز کرتے ہوئے ہزاروں سے لاکھوں تک پہنچایا گیا ہے تاکہ بروقت تشخیص کی صورت میں علاج فراہم کرنے سے ایچ آئی وی کو ایڈز میں تبدیل ہونے سے روکا جاسکے اور قیمتی زندگیاں بچائی جاسکیں۔

hiv

Health Department of Sindh

Tabool ads will show in this div