ٹوئٹر ملازمین کا کمپنی چھوڑنے کا فیصلہ، دفاتر عارضی طور پربند

ٹوئٹر ملازمین کوٹوئٹر کے نئے مالک ایلون مسک کی ہارٹ کور پالسی سے شدید اختلاف

سینکٹروں ملازمین نےاپنی ملازمت سے استعفیٰ دے دیا ،ٹوئٹر کے دفاتر کو عارضی طور پر بند کر دیا گیا۔

ایلون مسک کو ٹوئٹر کے ملازمین کو انتباہ کرنا مہنگا پڑ گیا ۔ ایلون مسک نے ملازمین کو ایک ای میل میں لکھا کہ وہ اگر کمپنی کا مزید حصہ بننا چاہتے ہیں تو انہیں مزید محنت کرنی ہوگی، اور مثالی کارکردگی دیکھانی ہوگی۔ نہیں تو وہ اپنی نوکری کو چھوڑ سکتے ہیں ۔

ایلون مسک کی اس ای میل کے بعد سے ہی ٹوئٹر کے ملازمین کا مستعفی ہونے کا سلسلہ جاری ہے ۔ یہاں تک کہ ایلون مسک کی ہارٹ کور پالیسی کواپنانے کے لیے ٹوئٹر کمپنی میں موجود انتہائی کم ملازمین نے حامی بھری۔

اس تمام صورتحال کے بعد سے ٹوئٹر کے دفاتر بند ہونا شروع ہوگئے۔ جس کے بعد سے کہا جارہا ہے کہ تمام دفتری امور کو 21 نومبر تک موخر کر دیا گیا ۔ ٹوئٹر کے نئے سی ای او ایلون مسک نے کہا ہے کہ وہ ان استعفوں پر دل برداشتہ نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ کمپنی کے لیے ہائی ٹائم ہے لیکن اس کے باوجود بھی ٹوئٹر کا استعمال بے حد زیادہ بڑھ گیا ہے ۔

اس تمام صورتحال کے بعد سوشل میڈیا خاص کر ٹوئٹر پر #GoodByeTwitter ٹرینڈ کر رہا ہے۔

elon musk twitter

twitter layoff

Twitter CEO

goodbye twitter

Tabool ads will show in this div