پاکستان میں بھی ماحول دوست فیشن متعارف

پریشے عدنان نے کپڑوں کی تیاری کے دوران بچ جانے والے ٹکڑوں سے نئے ملبوسات ڈیزائن کردیئے

پریشے عدنان نے اپنے والد امیرعدنان کے پرانے کپڑوں سے اپنی نئی کلیکشن Un-Gaze کو ڈیزائن کیا۔

پاکستان کے نامور ڈیزائنرزامیر عدنان اور ہما عدنان کی صاحبزادی پریشے عدنان نے اپنی پہلی ونٹر کلیکشن متعارف کرائی۔

پریشے نے اپنی کلیکشن کوUn-Gaze کا نام دیا، جس میں ڈیزائنر نے اس بات کا خاص خیال رکھا کہ تیار کی جانے والی کلیکشن ماحول دوست ہو۔ اسے فیشن کی نئی اصطلاح میں Sustainable fashion یا ایکو فیشن کہا جاتا ہے۔

اپنی نئی کلیکشن تیار کرنے کے لئے پریشے نے اپنے والد امیر عدنان کے تیار کردہ کپڑوں کے بچ جانے والے ٹکڑے استعمال کئے۔

 پریشے اپنے والدین امیر اور ہما عدنان کے ہمراہ
پریشے اپنے والدین امیر اور ہما عدنان کے ہمراہ

 پاکستانی کی فیمیل ریپ سنگر ایوا بی
پاکستانی کی فیمیل ریپ سنگر ایوا بی

  پاکستانی بلاگر امتل انجم
پاکستانی بلاگر امتل انجم

 ۔
۔

 ۔
۔

 ۔
۔

 ۔
۔

 ۔
۔

اس کلیکشن کا مرکزی خیال خواتین کو خودمختار بنانے پر مبنی تھا۔ جس میں 25 ملبوسات سامنے لائے گئے۔

پریشے کی اس کلکیشن شوکیس میں خواتین ماڈلز نے اعتماد اور طاقت کے اظہار کے لئے تلوار بھی اٹھا رکھی تھی۔

fashion

environment

Parishae Adnan

Sustainable fashion

Tabool ads will show in this div