شادی نہ کروانے پر بدبخت بیٹے نے ماں کو قتل کردیا

عبدالاحد نے پہلے واقعے کو حادثہ قرار دیا لیکن پوسٹ مارٹم نے ساری حقیقت کھول دی

بھارت میں بے حس بیٹے نے شادی نہ کروانے پر بیٹے نے ماں کو قتل کردیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق بھوپال کے نواحی گاؤں خانو میں عاصمہ فاروقی نامی خاتون اپنے 2 بیٹوں عطاءاللہ اور عبدالاحد فرحان کے ساتھ رہتی تھیں۔

عطاءاللہ شادی شدہ ہے جب کہ عبدالاحد فرحان کی شادی نہیں ہوئی تھی۔

8 نومبر کو عطاءاللہ اپنی بیوی کے ساتھ سسرال گیا تھا اسی دوران عبدالاحد فرحان کی اپنی ماں سے تلخ کلامی ہوگئی۔

نافرمان بیٹے نے ماں کو بدترین تشدد کا نشانہ بنایا جس سے عاصمہ فاروقی موقع پر ہی دم توڑ گئیں۔

عطاءاللہ گھر آیا تو اس نے ماں کو خون میں لت پت دیکھا۔ وہ ماں کو اسپتال لے گیا جہاں ڈاکٹروں نے کہا کہ اس کی موت کئی کئی گھنٹے ہوچکے ہیں۔

عبدالاحد فرحان نے شروع میں بتایا کہ والدہ چھت سے گر سے زخمی ہوگئی تھی۔ پولیس بھی اس پورے معاملے کو حادثہ سمجھ رہی تھی لیکن جب اس کیس کی پوسٹ مارٹم رپورٹ آئی تو پولیس کو حادثہ نہیں قتل کا سراغ ملا۔

پوسٹ مارٹم رپورٹ کی روشنی میں پولیس نے تحقیقات شروع کی، پولیس کو معلوم ہوا کہ عطاء اللہ تو اس وقت گھر سے باہر گیا ہوا تھا، عبدالاحد فرحان اور اس کی والدہ گھر میں اکیلے تھے۔

پولیس نے عبدالاحد فرحان سے پوچھ گچھ کی تو اس نے قتل کا راز کھول دیا۔

ایڈیشنل ڈی سی پی رام سنہا مشرا نے بتایا کہ عبدالاحد فرحان نے بی کام کیا ہے اور وہ شادی کی ضد کررکھی تھی۔ شادی ہی کی بات پر جھگڑا ہوا اور اس نے اپنی ماں کو قتل کردیا، ملزم نے جرم کا اعتراف بھی کر لیا ہے۔

انڈیا

mother killed

Tabool ads will show in this div