عمران خان کو چار گولیاں لگیں یا گولی کے 4 ٹکڑے؟

شوکت خانم اسپتال نے بڑا وضاحتی بیان جاری کردیا

شوکت خانم اسپتال نے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان پر فائرنگ کے حوالے سے وضاحتی بیان جاری کردیا۔

چیئرمین تحریک انصاف عمران کو چار گولیاں لگیں یا گولی کے 4 ٹکڑے؟ ۔۔۔ شوکت خانم اسپتال نے بڑا وضاحتی بیان جاری کردیا۔

عمران خان کے اپنے اسپتال نے چار گولیاں لگنے کا دعوئ مسترد کردیا ہے، اور شوکت خانم اسپتال کی جانب سے جاری کردہ دستاویز کے مطابق عمران خان کے جسم میں گولی کے ٹوٹل چار ٹکڑے تھے، جنہیں نکالنے کيلئے آپریشن کيا گيا۔

شوکت خانم اسپتال نے وضاحتی بیان میں بتایا کہ عمران خان کے جسم میں گولی کے ٹوٹل 4 ٹکڑے تھے، عمران خان کی دائیں ٹانگ سے آپریشن کرکے ٹکڑے نکالے گئے، جب کہ بائیں ٹانگ سے ٹکڑا نہیں نکالا گیا۔

شوکت خانم اسپتال نے بیان میں بتایا کہ عمران خان اسپتال پہنچنے پر مکمل ہوش میں تھے، اور اب ان کی حالت تیزی سے بہترہورہی ہے۔

واضح رہے کہ حادثے کے روز ڈاکٹر فیصل سلطان نے عمران خان کے جسم میں گولیوں کے ٹکڑوں کا ذکر کیا تھا، جناح اسپتال کی میڈیکولیگل ٹیم نے دو گولیاں لگنے کی بات کی، جب کہ عمران خان نے بیان دیا کہ مجھے چار گولیاں لگیں۔

PTI long march

pti long march 2022

imran khan firing

WAZIRABAD FIRING

Tabool ads will show in this div