لال حویلی پر شیخ رشید کا قبضہ غیرقانونی قرار، محکمہ اوقاف نے 27 سال سے زیرالتوا کیس کا فیصلہ سنادیا

سیاسی اثر و رسوخ کے باعث کیس 27 سال التوا کا شکار رہا، تحریری فیصلہ

محکمہ اوقاف نے لال حویلی کیس کا محفوظ فیصلہ سنادیا، لال حویلی سمیت 7 مختلف یونٹس پر شیخ رشید اور انکے بھائی کا قبضہ غیرقانونی قرار دیدیا۔

ڈپٹی ایڈمنسٹریٹر آصف خان نے کیس سے متعلق 26 ستمبر کو فیصلہ محفوظ کیا تھا، فیصلے میں کہا گیا ہے کہ درخواست گزار لال حویلی سمیت دیگر یونٹس سے متعلق کوئی ریکارڈ پیش نہ کرسکا۔

تحریری فیصلے میں کہا گیا ہے کہ سیاسی اثر و رسوخ کے باعث یہ کیس 27 سال التوا کا شکار رہا، شیخ برادران نے 1995ء سے محکمہ اوقاف کو کوئی ادائیگی نہیں کی۔

محکمہ اوقاف نے درخواست گزار کی ریگولائزیشن اور ٹرانسفر کی استدعا مسترد کردی۔

واضح رہے کہ متروکہ وقف املاک بورڈ نے گزشتہ روز لال حویلی کو سات روز میں خالی کرنے کا حکم دیا تھا۔

ڈپٹی ایڈمنسٹریٹر کی طرف سے سابق وفاقی وزیر شیخ رشید کے بھائی کو جاری نوٹس میں کہا گیا ہے کہ آپ کو اظہار وجوہ کا نوٹس جاری کیا گیا تھا مگر آپ پیش ہوئے نہ بقایا جات ادا کئے۔ اس لئے 7 روز تک خود عمارت خالی کردیں ورنہ پولیس کے ذریعے بے دخل کرایا جائے گا۔

ڈپٹی ایڈمنسٹریٹر نے شیخ صدیق کو نوٹس 11 اکتوبر کو جاری کیا تھا، اور انہیں 19 اکتوبر تک لال حویلی خالی کرنے کا کہا تھا۔

Sheikh Rasheed Ahmed

lal haveli

Evacuee Trust Property Board

Tabool ads will show in this div