طویل انتظار ختم۔۔!! نواز شریف سے مریم نواز شریف کی ملاقات

جذباتی مناظر ، آنکھیں نم
<p>بشکریہ ٹوئٹر</p>

بشکریہ ٹوئٹر

پاکستان مسلم لیگ نواز (ن) کی نائب صدر مریم نواز شریف ( Maryam Nawaz Sharif) والد سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف ( Nawaz Sharif ) سے ملاقات کیلئے لندن ( London ) پہنچ گئی ہیں۔ اس والد اور بیٹی کی ملاقات کے موقع پر جذباتی مناظر دیکھے گئے۔

نومبر سال 2019 کے بعد بالا آخر 6 اکتوبر بروز جمعرات کو ایون فیلڈ کے مکینوں کا انتظار ختم ہوا اور مریم نواز شریف پاکستان سے بذریعہ دوحہ اڑان بھرتی ہوئی والد سے ملنے برطانیہ پہنچ گئی ہیں۔

ایون فیلڈ آمد پر ن لیگ کی نائب صدر کا پرتپاک استقبال کیا گیا۔ کارکنوں کی جانب سے ایون فیلڈ کے بار مریم نواز شریف اور قائد نواز شریف کے حق میں نعرے لگائے گئے۔

سابق وزیراعظم نواز شریف اور حسین نواز سمیت دیگر فیملی ممبرز نے مریم نواز کا استقبال کیا۔ مریم نواز کے ہمراہ بیٹا جنید صفدر، بہو عائشہ جنید اور ڈاکٹر عدنان بھی تھے۔

مریم نواز کے استقبال کیلئے مسلم لیگ نون لندن کے صدر زبیر گل، سیکرٹری انفارمیشن مسلم لیگ نون برطانیہ اقبال سندھو اور جنرل سیکریٹری مسلم لیگ نون لندن ایڈووکیٹ کامران اشرف سمیت دیگر رہنما اور کارکن موجود تھے، مریم نواز کی آمد پر کارکنوں نے گل پاشی کی گئی اور پارٹی سینئر نائب صدر کے حق میں نعرے بازی کی گئی۔

والد کے گھر آمد پر مریم نواز شریف نے میڈیا سے گفتگو نہیں کی، تاہم ان کا یہ کہنا تھا کہ آپ لوگ یہاں مجھ سے ملنے اور بات کرنے آئے ہیں اور میں آپ سب کا شکریہ ادا کرتی ہوں، اللہ تعالیٰ آپ سب کو خوش رکھے۔ اس موقع پر انہوں نے “شیر شیر “ کا نعرہ بھی لگایا۔ انہوں نے آنے والوں سے اظہار تشکر کیا، امکان ہے کہ وہ تقریباً ایک ماہ لندن میں قیام کریں گی۔

گھر کے اندر آمد پر مریم نواز اپنے والد نواز شریف پر نظر پڑتے ہی جذباتی اور آنکھیں نم ہوگئیں۔ اس موقع پر والد نے انہیں گلے لگایا۔ چار سال اور تقریبا تین ماہ بعد کی طویل جدائی اور انتظار کے بعد باپ بیٹی کی ملاقات کے مناظر دیکھنے والے تھے۔ باپ بیٹی کی ملاقات کی تصاویر سوشل میڈیا پر بھی وائرل ہوگئیں ہیں۔

واضح رہے کہ مریم نواز اپنی بیمار والدہ کو لندن میں چھوڑ کر 4 برس قبل نواز شریف کے ہمراہ پاکستان واپس آئی تھیں۔ مریم نواز کی اپنے والد نواز شریف سے آخری ملاقات کو بھی تقریباً 3 برس ہوچکے ہیں۔

بھائی سے ملاقات

مسلم ليگ ن کی نائب صدر مريم نواز کا لندن کے ہيتھروايئرپورٹ پر حسن نواز نے استقبال کيا۔ مریم نواز کی بھائی حسن نواز سے ائیرپورٹ پر ملاقات ہوئی جس کی تصویر سوشل میڈیا پر بھی وائرل ہورہی ہے، تصویر میں بہن بھائی کو گلے لگے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔

مریم کی زخمی لیگی خاتون کارکن سے ملاقات

لندن میں ایون فیلڈ اپارٹمنٹس کے باہر ن لیگ کی زخمی ہونے والی خاتون نوادرخان سے مریم نواز نے ملاقات کی اور ان کی خیریت دریافت کی۔

مسلم لیگ ن کی سینیر خاتون کارکن نوادرخان لودھی پارٹی کی نائب صدر مریم نواز کے استقبال کے دوران بھگدڑ کے باعث گر کر زخمی ہوگئی تھیں۔

انہیں مریم نواز کے بھائی حسین نواز طبی امداد کے لیے ایون فیلڈ ہاؤس لے آئے۔

واضح رہے کہ مریم نواز کی آمد کے موقع پر لیگی کارکنوں کی بڑی تعداد ایون فیلڈ کے باہر ان کے والہانہ استقبال کیلئے موجود تھی۔

رش کے باعث مریم نواز میڈیا سے گفتگو نہ کرسکیں، انہوں نے آنے والوں سے اظہار تشکر کیا، امکان ہے کہ وہ تقریباً ایک ماہ لندن میں قیام کریں گی۔

دوحا میں قیام

مریم نواز ایک روز دوحہ میں قیام کے بعد قطر ائیر ویز کی پرواز کیو آر ون سے لندن پہنچیں،مریم نواز کو لیڈی کمانڈوز اور سیکیورٹی کے اہلکار ائیرپورٹ سے باہر لے کر آئیں گے، مریم نواز کو سیکیورٹی حصار میں وی آئی ہی گیٹ سے روانہ کیا گیا۔ مریم نواز شریف کو بدھ 5 اکتوبر کو لاہور سے بذریعہ دوحہ لندن جانا تھا، تاہم پلان میں تبدیلی کے بعد انہوں نے قطر آمد پر مختصر قیام کا فیصلہ کیا۔ قطر میں قیام کے دوران مریم نواز شریف نے اپنے صاحبزداے جنید صفدر سے ملاقات کی۔

دوحا میں قیام کے دوران مریم نواز شریف نے سابق سینیٹر اور قومی احتساب بیورو کے سابق سربراہ سیف الرحمان کی رہائش گاہ پر قیام کیا۔ پلان میں تبدیلی کے بعد اب مریم نواز شریف صاحبزادے جنید صفدر اور بہو اور نواز شریف کے ذاتی معالج کے ہمراہ لندن آئی ہیں۔

واضح رہے کہ خاندان کا کوئی فرد مریم کیساتھ لندن نہیں گیا ہے۔

لندن روانگی سے قبل

پاکستان سے روانگی سے قبل مریم نواز کا کہنا تھا کہ وہ اپنے والد سے ملنے کیلئے بے چین ہیں۔ انتظار نہیں ہورہا تھا کہ کب طیارہ لینڈ کرے اور وہ اپنے والد سے ملیں، میں نواز شریف کی آواز ہوں، ان سے ملاقات بہت خوشی کا دن ہے۔

لندن میں مصروفیات

خاندانی ذرائع کا کہنا ہے کہ مریم نواز تقریباً ایک ماہ لندن میں قیام کریں گی جس کے بعد ان کا اپنے والد نواز شریف کے ہمراہ وطن واپس آنے کا امکان ہے۔ مریم نواز 6 نومبر کو پاکستان واپس آئیں گی۔

مریم نواز چار سال اور تقریبا تین ماہ بعد اپنے بھائیوں حسن اور حسین نواز سے ملیں گی۔ مریم نواز کے ہمراہ خاندان کا کوئی شخص نہیں جا رہا۔ مریم نواز نومبر 2019کے بعد اپنے والد نواز شریف سے ملاقات کریں گئیں۔

قبور پر حاضری

لندن روانگی سے قبل مریم نواز نے خاندان کے بڑوں کی قبور پر حاضری بھی دی۔ مریم نواز نے رائے ونڈ میں اپنی والدہ، دادا، دادی اور چچا کی قبروں پر حاضری اور فاتحہ خوانی کی۔ مریم نواز کافی دیر اپنی والدہ کلثوم نواز کی قبر پر بیٹھی رہیں۔

پاسپورٹ کا معاملہ

مریم نواز کو چوہدری شوگر مل کیس میں 8 اگست 2019 کو جیل میں نواز شریف سے ملاقات کے وقت گرفتار کیا گیا تھا، وہ اس کیس میں 48 روز نیب کی حراست میں رہیں، جس کے بعد انھیں جیل بھیج دیا گیا تھا۔

لاہور ہائی کورٹ نے 31 اکتوبر 2019 کو سات کروڑ روپے اور پاسپورٹ جمع کروانے پر انہیں ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیا تھا۔

واضح رہے کہ لاہور ہائی کورٹ کے حکم کے بعد گزشتہ روز منگل 4 اکتوبر کو مریم نواز کو ان کا پاسپورٹ واپس مل گیا تھا۔ اس موقع پر مریم نواز اپنا پاسپورٹ لینے پرویز رشید اور دیگر رہنماؤں کے ہمراہ لاہور ہائی کورٹ پہنچیں، جہاں انہوں نے رجسٹرار کے کمرے سے اپنا پاسپورٹ وصول کیا۔

مریم نواز نے ڈپٹی رجسٹرار کے کمرے سے پاسپورٹ وصول کیا، انہوں نے پاسپورٹ واپسی کے لیے دستاویزات پر دستخط کیے اور مطلوبہ جگہوں پر انگوٹھے لگائے۔

دال چاؤل کھا کر جشن منایا

مریم نواز شریف نے اپنے مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر پاسپورٹ ملنے پر اپنی ایک تصویر شیئر کرتے ہوئے جذبات کا اظہار کیا ہے۔

انہوں نے ایک دکان سے دال چاول کھاتے ہوئے اپنی تصویر کے کیپشن میں لکھا ہے کہ کورٹ سے واپسی پر کشمیری دال چاول کے ساتھ، پاسپورٹ مجھے دے دیا گیا ہے، الحمدللّٰہ۔

london visit

MARYAM NAWAZ SHARIF

AVENFIELD

MARYAM NAWAZ PASSPORT

MARYAM NAWAZ IN LONDON

Tabool ads will show in this div