دیپیکا پڈوکون کا ہالی ووڈ میں نسل پرستی کا شکار ہونے کا اعتراف

جب بھی امریکا جاتی ہوں پریشان ہوجاتی ہوں، دیپیکا پڈوکون

بالی ووڈ اداکارہ دیپیکا پڈوکون نے امریکا اور ہالی ووڈ میں نسل پرستی کا شکار ہونے کا اعتراف کیا ہے۔

دیپیکا پڈوکون کا شمار ان بالی ووڈ اداکاراؤں میں ہوتا ہے جو ہالی ووڈ فلموں میں مرکزی کردار نبھا چکی ہیں لیکن اس کے باوجود انہوں نے اعتراف کیا ہے کہ انہیں امریکا میں نسل پرستی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

ایک انٹرویو کے دوران دیپیکا پڈوکون نے کہا کہ مجھ سے میرے مداح پوچھتے ہیں کہ میں نے بین الاقوامی فلموں میں زیادہ کام کیوں نہیں کیا؟ میں جب بھی امریکا جاتی ہوں کچھ ایسی بات کہہ دی جاتی ہے یا پھر ایسی چیز ہوجاتی ہے جو مجھے پریشان کردیتی ہے۔

بالی ووڈ اداکارہ نے کہا کہ اپنی باتوں اور رویوں سے یہ جتلایا جاتا ہے کہ لوگ اپنی اس دنیا سے آگے کی کوئی چیز نہیں جانتے جس میں وہ رہ رہے ہوتے ہیں۔

دیپیکا پڈوکون نے امریکا میں ایک ہالی ووڈ اداکار سے ملاقات کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ اس اداکار نے میری تعریف کرتے ہوئے کہا کہ میں بہت اچھی انگریزی بول لیتی ہوں۔ پہلے تو میں اس بات کو سمجھ نہیں پائی کہ اس بات کا کیا مطلب ہے، پھر مجھے احساس ہوا کہ اس نے مجھ پر طنز کیا ہے۔

Hollywood

celebrities

bollywood actress

Deepika padukone

samaa movies

Samaa lifestyle

Tabool ads will show in this div