بھارتی فوج کے جنسی درندوں نے اپنی خاتون افسر کو بھی نہ بخشا

بھارتی فوج کی خاتون کیپٹن ریور رافٹنگ کورس کے لیے آئی تھی

بھارتی فوج میں جنسی درندگی اس حد تک بڑھ چکے ہے کہ اب ان سے خاتون افسران بھی محفوظ نہیں رہیں۔

بھارتی فوج اپنی جنسی درندگی کی وجہ سے عالمی سطح پر بدنام ہے، مقبوضہ کشمیر، آسام اور دیگر ریاستوں میں بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں خواتین سے ریپ کے ہزاروں واقعات سامنے آچکے ہیں اور اب یہ جنسی درندے اپنی ہی خاتون افسران کو بھی نہیں چھوڑ رہے۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق بھارتی فوج کی خاتون کیپٹن گزشتہ سال ریور رافٹنگ کورس کے لیے ریاست سکم میں واقع 17 ماؤنٹین ڈویژن آئی تھی اور اس دوران وہ ایک سرکاری رہائش گاہ میں مقیم تھی۔

ایک رات بھارت فوج کا ہی ایک نان کمیشنڈ افسر اس کے کمرے میں زبردستی گھس آیا اور اس کے بارے میں بےہودہ جملے کہنے لگا، اس نان کمیشنڈ افسر نے خاتون کیپٹن پر جنسی طور پر ہراساں بھی کیا، خاتون افسر کسی طریقے سے کمرے سے بھاگ نکلنے میں کامیاب ہوگئی۔

خاتون کیپٹن نے واقعے کی رپورٹ حکام بالا سے کی، واقعے کی ابتدائی تحقیقات کے بعد نان کمیشنڈ افسر کے خلاف کورٹ مارشل کی کارروائی شروع ہوئی۔ نجس میں فوجی اہلکار کو ملازمت سے برخاست کرنے کے ساتھ ساتھ ایک سال کی قید کی سزا کی سفارش کی۔

RAPE CASE

Indian military

Tabool ads will show in this div