وفاق اور سندھ کا تھر کول مائنز کا اہم منصوبہ باہمی اشتراک سے بنانے کا فيصلہ

قومی اہمیت کے منصوبے اب پاکستان اسپیڈ سے مکمل کرنے ہیں،شہباز شریف

وفاق اور سندھ حکومت نے تھر کول مائنز کو ریلوے لائن سے منسلک کرنے کا منصوبہ باہمی اشتراک سے بنانے کا فيصلہ کرلیا۔

اسلام آباد میں حکومت سندھ اور وفاق کے درمیان مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کی تقریب میں وزیراعظم شہبازشریف اور وفاقی وزراء بھی تقریب میں موجود تھے۔ وزیرریلوے سعدرفیق اور وزیراعلیٰ سندھ مرادعلی شاہ نے یادداشت پر دستخط کیے۔

تقریب سے خطاب میں وزیراعظم کا کہنا تھا کہ تھر میں ریلوے نظام بچھ جائے تو پورے ملک میں کوئلہ سپلائی ہوگا، وہ مقام آئےگا جب ہم کوئلے کی امپورٹ کی بچت کررہے ہوں گے۔ یہ ریلوےکی ٹرانسپورٹیشن کا نظام انقلاب لیکرآئے گا۔

شہبازشریف کا کہنا تھا کہ اللہ تعالیٰ نے پاکستان کو کوئلے کا خزانہ عطا کیا ہے، ایک لاکھ میگاواٹ بجلی پیدا کی جائے تویہ خزانہ 300 سال بجلی پیدا کرنے کیلئے کافی ہوگا۔

اس سے قبل تھر کول مائنز کو ریلوے لائن سے منسلک کرنے کے حوالے سے اہم اجلاس میں وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ منصوبے سے درآمدی کوئلے کی بجائے مقامی کوئلے کا استعمال ہوگا۔ بجلی گھروں میں ايندھن کے طور پر بھی تھر کا کوئلہ استعمال کیاجائے گا جس سے درآمدی ایندھن کی مد میں سالانہ دو ارب ڈالر کی بچت ہوگی۔

اجلاس کو بتایا گیا کہ تھر کول مائنز کو ریلوے لائنز سے منسلک کرنے سے مقامی کوئلہ جامشورو، پورٹ قاسم اور ملک کے دوسرے پاور پلانٹس کے ساتھ ساتھ مقامی صنعت کو بھی فراہم کیا جائے گا۔

وزیراعظم شہباز شریف نے کہا گزشتہ حکومت نے جاری منصوبے روک کر ملک و قوم کا پیسہ برباد کرنے کی گھناؤنی سازش کی، 2018 سے 2022 تک روکی گئی ترقی کو موجودہ حکومت بحال کر رہی ہے، اور اب قومی اہمیت کے منصوبے پاکستان اسپیڈ سے مکمل کرنے ہیں۔

Sindh Government

federal government

Tabool ads will show in this div