’’عمران خان کے لئے اکتوبر اور نومبر مصیبت کے مہینے ہیں‘‘

عمران خان کے دن گنے جا چکے اور وہ پھنس چکے ہیں، رہنما پی پی پی

پیپلزپارٹی کے رہنما منظوروسان نے کہا کہ عمران خان کے لئے اکتوبر اور نومبرمصیبت کے مہینے ہیں۔

اپنے خوابوں کی وجہ سے معروف مشیر زراعت سندھ اور پیپلزپارٹی کے رہنما منظوروسان نے ایک بار پھر پیشگوئی کی ہے کہ چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کے دن گنے جا چکے ہیں اور وہ پھنس چکے ہیں۔

منظور وسان نے کہا کہ عمران خان کے لئے اکتوبر اور نومبر مصیبت کے مہینے ہیں، مجھے اب ان کا فیوچر کہیں نظر نہیں آرہا، انہیں جہاں سے پک کیا گیا تھا، وہیں واپس بھیج رہے ہیں۔

رہنما پی پی نے کہا کہ وارنٹ جاری ہوتے ہی کپتان بنی گالا سے پشاور یا کسی اور جگہ بھاگ جاتا ہے، عمران خان نے کبھی جیل دیکھی ہی نہیں ہے، وہ جو دھمکی دیتے ہیں کچھ نہیں کرسکتے۔

منظوروسان نے دعوی کیا کہ عمران خان کے مطابق جب ججز کی بحالی کی تحریک چلی تھی تو وہ صرف چار دن جیل گئے تھے، عمران خان میرے ساتھ 2002 میں ایم این اے تھے، تب مجھے کہتے تھے کہ آپ لوگ جیل میں کیسے دن گزار لیتے ہیں، اگر میں جیل جائوں تو خودکشی کرلوں۔

ہوسکتا ہے کہ الیکشن ایک سال کے لئے مؤخر ہوجائیں

گزشتہ روز بھی منظوروسان کا کہنا تھا کہ اکتوبر اور نومبر رواں سال کے بڑے خطرناک مہینے ہیں، اور ملک میں نئے الیکشن 2023 میں ہوں گے، جب کہ یہ بھی ہوسکتا ہے کہ الیکشن ایک سال کے لئےمؤخر ہو جائیں۔

رہنما پی پی پی نے ایک بار پھر پیشگوئی کی کہ اب بہت سے نئے نئے چہرے مختلف جیلوں میں جائیں گے، اور کچھ خیرپور جیل میں بھی آئیں گے۔

منظور وسان نے مزید کہا کہ اب حکومت بھی متحرک ہوگی اوراسٹیبلشمنٹ بھی، اب سب واپس آئیں گے کوئی باہر نہیں بچے گا۔

Tabool ads will show in this div