وزیراعظم کا ٹینٹ سٹی میں قائم اسکول کا دورہ،بچوں سے دلچسپ گفتگو

بچے نے آذان بھی دی

وزیراعظم میاں محمد شہباز شریف نے دادؤ میں قائم ٹینٹ سٹی کے اسکول کے دورے پر بچوں میں گھل مل گئے اور دلچسپ گفتگو کی۔ اس موقع پر ایک بچے نے وزیراعظم کے سامنے اذان بھی دی۔

وزیراعظم میاں محمد شہباز شریف نے منگل 27 ستمبر کو سیلاب سے متاثرہ سندھ کے ضلع دادو میں متاثرین کیلئے قائم ٹینٹ سٹی کا دورہ کیا۔ اس موقع پر وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی بھی وزراعظم کے ہمراہ تھے۔ حکام کی جانب سے وزیراعظم کو سیلاب زدہ علاقوں سے متعلق بریفنگ بھی دی گئی۔

دورہ کے موقع پر وزیراعظم کو بریفنگ میں بتایا گیا کہ ضلع دادو میں سیلاب سے 37 افراد جاں بحق ہوئے، 66 یونین کونسل سیلاب سے متاثر ہوئیں، فصلوں کو بھی شدید نقصان پہنچا ہے، ریلیف کیمپس میں متاثرین کو ہر ممکن سہولت دے رہے ہیں، متاثرین کیلئے ٹینٹ اور دیگر ضروری اشیاء کی ضرورت ہے۔

اپنے دورہ کے دوران وزیراعظم میاں شہباز شریف نے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ انتظامیہ مشکل میں متاثرین کی مدد کر رہی ہے۔

دورے کے دوران وزیراعظم شہباز شریف نے سیلاب متاثرین سے ملاقاتیں بھی کیں، بچوں کیساتھ گھل مل گئے، سیلاب زدگان سے مسائل دریافت کیے۔ وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کہا کہ اسکولوں میں سیلاب متاثرین کیلئے کیمپ لگائے گئے ہیں، خیموں کی کمی اب بھی ہے، سندھ حکومت متاثرین کو ریلیف فراہم کر رہی ہے۔

وزیراعظم شہباز شریف نے متاثرین کو تسلی دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں نے ملکر اس بحران کا مقابلہ اور اس سے نکلنا ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ سیلاب متاثرہ خاندانوں میں 25،25ہزار روپے تقسیم کر رہے ہیں۔ حوصلہ دیتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ہمیں گھبرانا نہیں۔ مشکل وقت میں سیاسی پوائنٹ اسکورنگ سے گریز کرنا چاہیے۔

وزیراعظم نے کیا کہا؟

وزیراعظم نے متاثرین سے گفتگو میں پوچھا کہ یہاں کس چیز کی کمی ہے؟، جن لوگوں کو ٹینٹس ملے ہیں وہ گھر واپسی پر ساتھ لے جائیں۔ دادو میں پانی ہر جگہ پھیلا ہواہے، 1600سے زائد افراد جاں بحق ہوچکے ہیں۔ 13لاکھ سے زائد مویشیوں کی اموات ہوئی ہیں، لاکھوں ایکڑ پر کھڑی فصل تباہ ہوگئی ہے۔ تقریباً 30 ارب ڈالر سے زائد کا پاکستان کا نقصان ہوچکا ہے۔

اس موقع پر وزیراعظم نے مراد علی شاہ کے کام کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعلیٰ سندھ مرادعلی شاہ کی پوری ٹیم اچھا کام کر رہی ہے، پاک افواج کے جوان یہاں کام کر رہے ہیں، اس مشکل وقت میں اگر کوئی خرابی ہے تو ٹھیک کریں سیاست نہ کریں، لاکھوں خاندان متاثر ہوئے ہیں، اگلا کام ریسکیو کا ہے، کئی سڑکیں تباہ ہوگئی ہیں۔ سندھ میں سب سے زیادہ تباہی ہوئی، جب کہ بلوچستان میں بھی تباہی ہوئی۔

انہوں نے تمام سیاسی رہنماؤں سے اپیل کی کہ اس وقت ہم سب کو کام کرنا چاہیے، سیاست سے پرہیز کریں۔ قوم کو اس وقت مرہم دیں، دست شفقت رکھیں۔ جو ممالک سیلاب کی صورت حال میں تعاون کر رہے ہیں، ان کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔

وزیراعظم شہباز شریف نے یہ بھی کہا کہ اقوام متحدہ کی اسمبلی میں خطاب میں سیلاب سے متعلق قوم کی آواز اٹھائی، دنیا ہماری مشکلات سے بھر پور آگاہ ہے، ہم دوسروں کا کیا دھرا سیلاب کی صورت میں بھگت رہے ہیں، سیلاب انسان کی دی ہوئی آفت ہے صوبائی حکومتیں سیلاب متاثرین کی بھرپور مدد کر رہی ہیں۔

بریفنگ کی تفصیلات

  • دادو کی 66یوسیز سیلاب سےمتاثرہوئی ہیں۔
  • دادومیں سیلاب سے37افرادجاں بحق ہوئے۔
  • سیلاب سےچاول کی فصل مکمل تباہ ہوئی ہے۔

وزیراعلیٰ سندھ

وزیراعلیٰ سید مراد علی شاہ نے بتایا کہ گاچ ہی منچھرجھیل کو بھرتا ہے۔ ضلع دادو سیلاب سے سب سے پہلے متاثر ہونے والا ضلع ہے۔ ٹینٹس کی ابھی بھی کمی ہے۔

Tabool ads will show in this div