عمران خان کے الزامات پر الیکشن کمیشن کا ردعمل سامنے آگیا

عام انتخابات اسمبلیوں کی مدت پوری یا تحلیل ہونے پر ہی ہوسکتے،اعلامیہ

الیکشن کمیشن نے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کے الزامات پر ردعمل دیتے ہوئے واضح کیا ہے کہ عام انتخابات کب کرانے ہیں یہ طے کرنا الیکشن کمیشن کی ذمہ داری نہیں۔

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان عوامی جلسوں میں الیکشن کمیشن آف پاکستان اور چیف الیکشن کمشنرکو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہیں۔

عمران خان الیکشن کمیشن کو موجودہ حکومت کی کٹھ پتلی اور چیف الیکشن کمشنرکو مسلم لیگ (ن) کا ایجنٹ قرار دیتے ہیں۔

سابق وزیر اعظم جلسوں اور انٹرویوز میں کہتے رہے ہیں کہ چیف الیکشن کمشنر نے ملک میں شفاف انتخابات کے لئے ان کی کوششوں کو سبوتاژ کیا، الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم) کی راہ میں چیف الیکشن کمشنرسب سے بڑی رکاوٹ بنے۔

عمران خان کے الزامات پر الیکشن کمیشن نے اپنے ردعمل میں کہا ہے کہ انتخابات کب کرانے ہیں یہ دائرہ اختیار الیکشن کمیشن کا نہیں۔ عام انتخابات اسمبلیوں کی مدت پوری ہونے یا اسمبلیاں تحلیل ہونے پر ہی ہوسکتے ہیں۔

الیکشن کمیشن نے کہا ہے کہ فی الحال نہ تو اسمبلیوں کی مدت پوری ہوئی ہے نہ ہی اسمبلیاں تحلیل ہوئی ہیں۔

الیکشن کمیشن نے واضح کیا ہے کہ جب بھی الیکشن ہوئے شفاف انتخابات کی ذمہ داری نبھائیں گے۔ کسی دباؤ کے بغیر آئین اور قانون کے مطابق فیصلے کرتے رہیں گے۔

PTI

IMRAN KHAN

ELECTION COMMISION OF PAKISTAN (ECP)

Tabool ads will show in this div