لیگی رہنماوں کی اپوزیشن جماعتوں پر کڑی تنقید

May 12, 2016

Talal Ch Pc Isb 12-05

اسلام آباد: پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنماوں کا کہنا ہے کہ اپوزیشن جان بوجھ کر معاملات کو الجھا رہی ہے اور متحدہ اتحاد بھی وزیراعظم نواز شریف کی دشمنی میں بنایا گیا۔ نوازشریف کے بیرون ملک کوئی اثاثے نہیں ہیں۔ ہمارے سوالوں کے جواب نہ ملنے کا مطلب ہوگا کہ اپوزیشن لاجواب ہے۔

اسلام آباد میں مسلم لیگ ن کے رہنماؤں کی جانب سے میڈیا سے گفتگو کی گئی۔ گفتگو کے دوران لیگی رہنما طلال چوہدری، دانیال عزیز اور وفاقی وزیر محمد زبیر موجود تھے۔

اپوزیشن کو مخاطب کرتے ہوئے طلال چوہدری کا کہنا تھا آپ پارلیمنٹ کا چھوٹا سا حصہ ہیں، بڑاحصہ ن لیگ ہے اور پارلیمنٹ کی بڑی اکثریت وزیراعظم نوازشریف کےساتھ ہے۔ طلال چوہدری کا کہنا تھا چند لوگوں نےاپنی خواہشات کو سوالوں کا روپ دیا ہے، 150 آف شورکمپنیاں رکھنے والےجواب کیوں نہیں دیتے، نوازشریف کے نام پرکوئی آف شور کمپنی نہیں اور التوفیق کیس میں بھی نوازشریف کا نام نہیں۔

مزید پڑھیں؛ وزیراعظم سے 7 سوالوں کا تفصیلی جواب چاہیئے،اعتزاز احسن

طلال چوہدری نے کہا جو سوال پارلیمنٹ کے اندر ہوگا اس کا جواب وہیں دیا جائے گا، جوسوال میڈیا پر کیا جائے گا اس کا جواب میڈیا پر ہی دیا جائے گا، اور اسی طرح کیمروں کے سامنے پوچھے گئےسوالوں کا جواب کیمروں کےسامنےدیں گے۔

وزیر مملکت محمدزبیر نے کہا ہماری طرف سے دیے گئے جوابات ٹو دی پوائنٹ تھے، وزیراعظم کے بیٹے حسین نواز کی آف شورکمپنی جائز ہے، اور آف شور کمپنی رکھنا ناجائز نہیں۔ انہوں نے واضح کیا وزیراعظم کی جانب سے جمع کرائے گئے گوشوارے جامع ہیں، کسی بھی معلومات کے حصول کیلئے متعلقہ محکمے سے رابطہ کیا جاسکتا ہے۔

مزید پڑھیں؛ پاناما لیکس : وزیراعظم پیر کو قومی اسمبلی میں پالیسی بیان دینگے

وزیر مملکت نے بتایا کہ وزیراعطم نوازشریف کے بیرون ملک کوئی اثاثے نہیں ہیں، مشرف دورمیں وزیراعطم اور انکے خاندان کے اثاثوں کی مکمل چھان بین ہوئی، پاکستان کے اداروں کی جانب سے بھی نوازشریف کو کلین چٹ دی گئی۔

لیگی رہنما دانیال عزیز نے کہا ہم نے اپنا سوال نامہ عوام کے سامنے رکھ دیا ہے، ہمارے سوالوں کے جواب نہ ملنے کا مطلب ہوگا کہ اپوزیشن لاجواب ہے۔ انہوں نے کہا وزیراعظم کے سپریم کورٹ سے تحقیقات کے اعلان سے اپوزیشن بھاگ رہی ہے اور یہ اپوزیشن کی بدنیتی ہے کہ وہ سپریم کورٹ نہیں جارہی۔ ہم اپوزیشن کو سپریم کورٹ تحقیقاتی کمیشن سے بھاگنے نہیں دیں گے، سپریم کورٹ سمجھے تو ٹی آوآرز میں تبدیلی کرسکتی ہے۔

مزید پڑھیں؛ اپوزیشن مجھ سے سوال جواب نہیں کرسکتی، وزیراعظم

دانیال عزیز نے کہا پہلےدن سے کہہ رہے ہیں اپوزیشن کمیشن سے بھاگ جائےگی۔ اپوزیشن بتائے کہ ٹیکس چوروں اور قرض خوروں کو ٹی اوآرز سے کیوں نکالا؟ عمران خان کو اب فرانزک آڈٹ کا مطالبہ کیوں یاد نہیں آرہا۔ انہوں نے کہا سپریم کورٹ کا مطالبہ کرنے والےعمران اب نیب سے تحقیقات چاہتے ہیں، احتساب کا پرچار کرنے والوں نے پختونخوا میں ڈی جی نیب کو ہی ہٹا دیا، بنوں کے جلسے میں عوام نےعمران کو بتا دیا کہ صوبے میں کوئی تبدیلی نہیں آئی، عمران خان نے قلابازی خان بن کر اپنی ساکھ تباہ کرلی ہے۔ سماء

opposition parties

PMLN Leaders

Panama leaks

Tabool ads will show in this div