سزا مکمل کرنے والے غیر ملکی قیدیوں کیلئے حکومت کا بڑا فیصلہ

وزارت داخلہ نے اہم سفارشات تیار کر لیں

پاکستان کی جیلوں میں سزا مکمل کرنےوالےغیرملکی قیدیوں کی وطن واپسی سے متعلق وزارت داخلہ نے اہم سفارشات تیارکرلیں۔

پاکستانی جیلوں میں سزا مکمل کرنے والےغیر ملکی قیدیوں کیلئے حکومت نے بڑا فیصلہ کرلیا ہے، اور فیڈرل ریوییو بورڈ کی ہدایت پر وزارت داخلہ نے اہم سفارشات تیار کر لی ہیں۔

وزیر داخلہ رانا ثناءاللہ کی زیر صدارت ٹیم نے ایسے غیر ملکی قیدیوں کے ریکارڈ، سہولت اور ان کی واپسی کیلیے جامع سفارشات مرتب کیں ہیں، جن سے بنگلہ دیش کے11قیدیوں سمیت مختلف ممالک کے35 قیدیوں کوفائدہ ہوگا۔

دستاویز کے مطابق پہلے مرحلے میں ذہنی معذور قیدیوں کو پناہ گاہوں اور دارالامان منتقل کیا جائے گا، ان ذہنی معذورقیدیوں کا علاج پنجاب انسٹیٹیوٹ آف مینٹل ہیلتھ لاہورمیں ہوگا۔

دستاویز میں بتایا گیا ہے کہ 4 بھارتیوں سمیت 20 غیر ملکی قیدیوں کیلئے ایلین رجسٹریشن کارڈز تیار کئے گئے ہیں، ایلین رجسٹریشن کارڈز بائیو میٹرک ڈیٹا حاصل کرنے کے بعد تیار کیے گئے ہیں۔

دستاویز کے مطابق قیدیوں کی بحفاظت رہائش وبحالی کیلئے صوبائی اداروں، این جی اوز سے مدد لی جائے گی، اور ان کی وطن واپسی کیلئے مؤثر رابطے کیے جائیں گے،

فیصلے سے فیصلے سے قوت سماعت و گویائی سے محروم ایک بھارتی قیدی کو بھی فائدہ ہوگا، جب کہ بنگلہ دیش کے11، یواےای ، تنزانیہ، ڈومینک اور میانمر سے ایک ایک قیدی بھی مستفید ہوں گے۔

Tabool ads will show in this div