حقیقی آزادی کیلئے جلد کال دوں گا، عمران خان

ایسے کسی فرد کو وزیر نہیں بناؤں گا جس کی جائیداد اور پیسہ بیرون ملک ہوگا، سابق وزیراعظم

سابق وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ بہت جلد حقیقی آزادی کی کال دوں گا، ہم نے ملک کی خارجہ پالیسی کو آزاد بنانا ہے۔

چارسدہ میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کا کہنا تھا کہ حقیقی آزادی کیلئے جلد کال دوں گا، عوام آپ نے حقیقی آزادی کیلئے ساتھ دینا ہے۔

عمران خان نے کہا کہ دہشتگری کیخلاف جنگ میں سب سے زیادہ قربانی خیبر پختونخوا نے دی، ہمیں سپر پاور کی غلامی نہیں کرنی ہے، ہم نے خوف میں آکر کسی کی جنگ میں شرکت نہیں کرنی ہے، ہم نے ملک کی خارجہ پالیسی کو آزاد بنانا ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ ایک سازش کےتحت امپورٹڈ حکومت ہم پر مسلط کی گئی، امریکا چاہتا تھا کہ ایسا حکمران آئے جب حکم کریں تو جوتے پالش کریں۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ عمران خان نے کہا جب ہمیں 2018 میں حکومت ملی تو پاکستان کی ایکسپورٹ 24 ارب ڈالر تھی، بیرون ملک پاکستانیوں پیسہ 19 ارب ڈالر آتا تھا، جب کہ ملک کا بیرونی خسارہ 20 ارب ڈالر تھا، جو تاریخ کا سب سے بڑا خسارہ تھا۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ جب ہم 9 اپریل 2022 کو حکومت چھوڑ کر گئے تو پاکستان کا خسارہ گھٹ کر 16 ارب ڈالر رہ گیا، بیرون ملک پاکستانی 19 کے بجائے 31 ارب ڈالر بھیج رہے تھے، اور ایکسپورٹ 32 ارب ڈالر تک پہنچ گئی، جو ایک ریکارڈ ہے۔

سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ہم دو سال کرونا کی وبا دیکھنے کے باوجود بہتر معیشت چھوڑ کرگئے، ریکارڈ ایکسپورٹس، پاکستانی تاریخ کا سب سے زیادہ ٹیکس کا پیسہ 6 ہزار 100 ارب روپے اکھٹا کیا، 4 فصلوں کی ریکارڈ پیداوار ہوئی، اور پھر ہماری حکومت ایک سازش کے تحت گرا دی گئی۔

عمران خان نے کہا کہ ہماری حکومت کے آخری دو سال میں پاکستان کی معشیت 17 سال کی بہترین پوزیشن پر تھی، جب کہ یہ پہلی حکومت تھی جسے جب چوروں نے گرایا تو مجھ سمیت کسی وزیر پر کوئی کرپشن کا کیس نہیں تھا، اور موجودہ حکومت نے آتے ہی اپنے کرپشن کی کیسز ختم کرنا شروع کردیئے۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ موجودہ حکومت کے آتے ہی ہمارا روپیہ گرنا شروع ہوگیا، 4 ماہ میں 178 روپے والا ڈالر 236 روپے تک پہنچ گیا، ملکی دولت میں 30 فیصد کمی ہوگئی، جب کہ چوروں کی دولت میں 30 فیصد کا اضافہ ہوگیا۔

عمران خان نے کہا عوام سے کہتا ہوں کبھی اس جماعت کو کبھی ووٹ مت دینا، جن کے لیڈرز کے پیسے، جائیدادیں اور کاروبار بیرون ملک ہوں، میں نے تہیہ کرلیا ہے کہ ایسے کسی فرد کو وزیر نہیں بناؤں گا جس کا پیسہ اور جائیدادیں بیرون ملک ہوں گی، کیوں کہ جب تک کسی سیاستدان کے پیسے اور جائیدایں پاکستان میں نہیں وہ ملک سے وفادار نہیں ہوسکتا۔

عمران خان نے کہا کہ میں چاہتا ہوں جو بھی قیادت آئے اس کا پیسہ جینا مرنا سب پاکستان میں ہو، تاکہ وہ ملک کے ساتھ ہی نیچے جائے، وہ اپنے ملک کے لئے لڑے۔

سابق وزیر اعظم نے کہا کہ 9 اپریل کو عالمی منڈی میں تیل کی قیمت 103 ڈالر فی بیرل تھی، اور پاکستان میں پیٹرول 150 روپے لیٹر تھا، جب کہ آج تیل کی قیمت گر کر 93 ڈالر فی بیرل پر آگئی ہے اور پیٹرول کی قیمت 236 روپے فی لیٹر ہے، ہمارے دو میں بجلی کی فی یونٹ کی قیمت 16 روپے تھی، جب کہ آج 36 روپے فی یونٹ ہے۔

عمران خان نے کہا کہ یہ حکومت مہنگائی کم کرنے آئی تھی، اور 4 ماہ میں مہنگائی کے سارے ریکارڈ ہی توڑ دیئے۔

پی ٹی آئی چیئرمین کا کہنا تھا کہ آج آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک کہہ رہا ہے کہ پاکستان سری لنکا کی طرح ہونے جارہا ہے، ملک میں انتشار ہونے جارہا ہے، اس لئے میرا اس حکومت اور جو بھی اس حکومت کے پیچھے کھڑے ہیں ان کے لئے پیغام ہے کہ وہ سن لیں کہ ایک اچھی حکومت کو گرانے پر اور عوام کو مہنگائی کی چکی میں پھنسانے پر قوم آپ کو کبھی نہیں بھولے گی اور اللہ بھی معاف نہیں کرے گا۔

عمران خان نے مزید کہا کہ یہ حکومت کچھ بھی کرلے، صحافیوں کے منہ بند کرلے، سیاسی مخالفین پر پرچے درج کرالے، جو بھی ہو جائے یہ میچ آپ نہیں جیت سکتے، آپ ہار چکے ہیں۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ الیکشن میں جتنی دیر ہوگی ہماری معیشت اتنی ہی تیزی سے نیچے جائے گی، آج پورا پاکستان ڈوبا ہوا ہے اور کوئی پیسے دینے کا تیار نہیں، سندھ کی حالت سب سے بری ہے لیکن کوئی مدد نہیں کررہا، کیوں کہ وہا آصف زرداری ہے، اور اس کو پیسے دینے کا مطلب بلے کو دودھ کی رکھوالی پر بٹھانا ہے۔

IMRAN KHAN

imran khan today

S.A.H.ZAHIDI Sep 17, 2022 06:55pm
Jis ka apna illegal ghar ab tak regularize na hua ho !!!
Tabool ads will show in this div