لاہور میں واقع پاکستان کا سب سے بلند مغلیہ مقبرہ

مقبرے تک پہنچنے کیلئے 500 میٹر طویل سرنگ کو عبور کرنا پڑتا ہے
<p>فوٹو: مقبرہ علی مردان خان</p>

فوٹو: مقبرہ علی مردان خان

محکمہ آثار قدیمہ نے لاہور کے علاقے مغل پورہ کے دامن ميں واقع مقبرہ علی مردان کی خوبصورتی کو بحال کرنے کا بیڑا اٹھالیا۔

مغلیہ دور کے انجینئر علی مردان خان کے مقبرے کو پاکستان کا سب سے بلند مقبرہ ہونے کا اعزاز حاصل ہے جہاں تک پہنچنے کے لئے پانچ سومیٹر طویل سرنگ کو عبور کرنا پڑتا ہے۔

اس مقبرے کو مغلیہ دور کے چہیتے انجینئر علی مردان خان نے اپنے لیے تعمیر کرایا تھا۔

یہ مقبرہ موسم کی سختیاں جھیلنے کے بعد کھنڈر بن چکا تھا تاہم اب محکمہ آثار قدیمہ نے اس کی خوب صورتی لوٹانے کا بیڑہ اٹھا لیا ہے۔

مغلیہ فن تعمیر کا شاہ کار یہ مقبرہ خوب صورتی میں بے مثال ہے جس کی تزئین و آرائش کا کام جاری ہے۔

محکمہ آثار قدیمہ نے اس مقبرے کی مخدوش حالت کی تزئين و آرائش کا کام شروع کر رکھا ہے۔

اس عظیم الشان مقبرے کا شان دار فریسکو آرٹ ورک آج بھی کسی کسی محراب میں آخری سانسیں لے رہا ہے جسے دوام بخشنے کے لئے کاریگر دن رات کام کررہے ہیں۔

شوخ رنگوں کے بیل بوٹے مغلیہ آرٹ کی پہچان ہیں جنہيں نقش کرنے ميں گھنٹے نہیں کئی کئی دن لگ جاتے ہیں۔

مقبرے میں ایک تہہ خانہ نما سرنگ بھی ہے جہاں نواب علی مردان خان، انکی والدہ اور اہلیہ کی قبریں موجود ہیں۔

Mughal era

ALI MARDAN TOMB

Tabool ads will show in this div