بدین: نالہ اوور فلو ہونے سے شہر ڈوبنے کا خدشہ،متاثرین تاحال امداد کے منتظر

سیم نالے میں پانی 25 ہزار کیوسک تک پہنچ گیا
<p>بشکریہ این ڈی ٹی وی</p>

بشکریہ این ڈی ٹی وی

ضلع بدین کا علاقہ پنگریو تاحال برسات کے پانی میں ڈوبا ہوا ہے، جہاں ایل بی او ڈی سیم نالا اوور فلو ہونے سے پنگریو اور جھڈو شہر ڈوبنے کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے۔

بدین

نمائندہ سما کے مطابق سندھ کے ضلع بدین میں ٹنڈو باگو کا شہر پنگریو تاحال برساتی پانی میں ڈوبا ہوا ہے، جہاں ایل بی او ڈی سیم نالے کی سطح میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔

پانی کی سطح بلند ہونے پر علاقہ مکینوں میں خوف کی فضا برقرار ہے، جب کہ لوگوں کا کہنا ہے کہ ایل بی او ڈی بند کمزور ہے اور یہ کسی بھی وقت ٹوٹ سکتا ہے، جس نقصان کا اندیشہ ہے۔

بدین سے تعلق رکھنے والے پاکستان پیپلزپارٹی کے رکن قومی اسمبلی علی بخش شاہ کا کہنا ہے کہ 4 ہزار کیوسک کی گنجائش ہے، جب کہ منگل کی صبح تک پانی 25 ہزار کیوسک کا گزر رہا ہے۔

نمائندہ سما کے مطابق علاقے میں تقریباً ساڑھے 3 لاکھ کی آبادی موجود ہے، اور بند ٹوٹنے سے متاثرہ ہونے کا خدشہ ہے۔

انتظامیہ کی جانب سے کچے کے علاقے میں بند کو مضبوط کرنے کیلئے منگل 30 اگست کو کام شروع کیا گیا ہے، تاہم لوگوں کا کہنا ہے کہ یہ عارضی حال ہے۔

دادو

دادو ميں بھی مزید سیلاب کاخطرہ ظاہر کیا گیا ہے، جہاں ضلعی انتظامیہ نے لوگوں کو تھریٹ الرٹ جاری کر دیا ہے۔ حکام نے میہڑ، خیرپور ناتھن شاہ اور جوہی کے علاقہ مکینوں کو محفوظ مقام پر منتقل ہونے کا کہہ ديا۔

انتظاميہ کے مطابق منچھر جھيل اوور فلو ہو چکی ہے، جہاں چوبيس سے اڑتاليس گھنٹے خطرناک ہیں۔

خیر پور

سندھ میں آنے والے سیلاب کے باعث خیرپور شہر سے صرف دس کلو میٹر کی دور قومی شاہراہ کے قریب پچاس سے زائد دیہات ڈوب گئے۔ دیہاتوں کا خیرپور سے زمینی رابطہ منقطع ہوگیا۔ سیلاب سے متاثرہ افراد کیلئے خوراک کی شدید قلت پیدا ہوگئی۔ متاثرین کا کہنا ہے کہ انتظامیہ نے تاحال علاقے میں کوئی ریسکیو آپریشن شروع نہیں کیا۔

سکھر

سکھر کا نواحی گاؤں یار محمد گھمرو بارش کے پانی میں ڈوب گیا، انتظامیہ تو علاقے میں نہ پہنچی مگر وہاں سماء وہاں پہنچ گیا۔ نمائندہ سما ساحل جوگی کے مطابق 500 گھروں پر مشتمل گاؤں زیر آب آگیا ہے علاقے میں سیلاب سے 200 گھر منہدم ہوگئے ہیں۔ متاثرین کا کہنا ہے کہ کوئی منتخب نمائندہ اور انتظامیہ کا عملہ امداد کیلئے نہیں پہنچا ہے۔

سما سے گفتگو میں متاثرہ خاتون نے رو کر کہا کہ اتنے پیسے نہیں کہ بچوں کو بسکٹ کھلا سکوں، جب کہ متاثری ایک شخص کا کہنا تھا کہ پی آئی اے سے ریٹائرڈ ہوں، بچوں سمیت بہن کے گھر آگیا یوں، بچے بھوکے ہیں، ہماری مدد کی جائے۔

سانگھڑ کے بچے کی ویڈیو

دوسری جانب سانگھڑ کے بچے کی ویڈیو منظر عام پر آئی ہے، جس میں بچے نے حکومت اور انتظامیہ سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ سندھ ڈوب رہا ہے۔ آؤ ہماری حالت دیکھو، ہمیں پانی سے نکالو۔

نوشہرہ

نمائندہ سما کے مطابق دریائے کابل میں اس وقت دو لاکھ پچاس ہزار کیوسک سے کم ریلہ گزر رہا رہے۔ دریا کے کنارے گھروں سے پانی نکل چکا ہے۔ نوشہرہ کے مقام پر دریائے کابل میں درمیانے درجے کا سیلاب ہے۔

سیلاب سے متاثر ہونے والے لوگ حکومتی امداد کے منتظر ہیں۔ چارسدہ کا علاقہ گل آباد بھی سیلاب سے شدید متاثر ہوا ہے جہاں درجنوں گھر پانی میں ڈوب گئے ہیں۔ اس وقت خیموں میں پناہ گزینوں کو خوراک کی قلت کا سامنا ہے۔

ٹانک میں سیلابی ریلوں سے فصلیں تباہ اور سڑکیں متاثر ہوئی ہیں۔ دوسری جانب کالام کے بالائی علاقے اتروڑ اور گبرال میں کئی رابطہ سڑکیں اور مکان سیلاب کے باعث صفحہ ہستی سے مٹ گئے۔ بالائی علاقوں کے لوگوں کا ملک کے دوسرے حصوں سے زمینی رابطہ منقطع ہوگیا ہے۔

پشین سیلاب

بلوچستان کے ضلع پشین کے گاؤں برشور میں واقع تورمرغہ ندی کا پُل ٹوٹنے سے مسافر اور ڈرائیور گزشتہ چار دنوں سے پھنسے ہوئے ہیں۔

ڈرائیوروں نے اپنی مدد آپ کے تحت ہزار ہزار روپے دیکھ کر مذکورہ پُل کی بحالی کا کام شروع کردیا ہے۔ متعلقہ مقام پر پھنسے ہوئے ڈرائیورز کا کہنا ہے کہ 4 دن سے کھانے کو کچھ نہیں ملا، بھوک سے مر رہے ہیں۔ ڈب خانزئی اور منزکی ندی کا پُل ٹوٹنے سے بھی مسافروں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

چمن

چمن کے مضافاتی علاقوں میں سیلابی صورت حال کے بعد ضلعی انتظامیہ کی جانب سے تمام بند راستوں کو کلیر کرنے کے بعد سیلاب متاثرین میں ضلعی انتظامیہ کی جانب سے ریلیف آپریشن تیزی سے جاری ہے۔

ڈپٹی کمشنر حمید زہری کا کہنا ہے کہ سیلاب سے تمام بند راستے کلیئر کر دیئے ہیں۔ دور دراز علاقوں میں سیلاب متاثرین میں امدادی سامان گھر گھر پہنچانے کا عمل تیزی سے جاری ہے۔

دریائے سندھ اور دریائے کابل میں اٹک پل کے مقام پر پانی کی سطح میں کمی ہونا شروع ہوگئی ہے، جہاں انتظامیہ نے لوگوں کو دریاوں سے دور رہنے کی ہدایت کی ہے۔

ٓآرمی چیف دورہ کرینگے

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سوات کے سیلاب سے متاثرہ علاقوں کا بھی دورہ کریں گے، ترجمان پاک افواج کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید سوات میں اپنے دورے کے دوران کمراٹ، کالام میں جاری فوج کی امدادی سرگرمیوں اور ریلیف آپریشن کا جائزہ بھی لیں گے۔

سندھ میں 402 اموات کی تصدیق

سندھ کے وزیر اطلاعات شرجیل انعام میمن نے تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ صوبے بھر میں بارشوں اور اس سے جاں بحق افراد کی تعداد 402 ہوگئی ہے، جب کہ صوبے میں بارشوں سے 860 ارب کا نقصان ہوا ہے۔

شرجیل میمن کے مطابق صوبے میں بارشوں سے 860 ارب کے نقصان کا تخمینہ لگایا گیا ہے۔ جب کہ اس دوران تقریباً 15 لاکھ مکانات متاثر ہوئے جن کی لاگت 450 ارب ہے۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ بارشوں کے دوران مختلف حادثات میں 11734 مویشی ہلاک ہوئے جن کی مالیت 903.96 ملین ہے، جب کہ 3171726 ایکڑ اراضی پر کھڑی فصلیں بھی تباہ ہوئیں، ان تباہ ہونے والی فصلوں کی مالیت335.44 ارب روپے ہے۔

این ڈی ایم اے رپورٹ

نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (این ڈی ایم اے) کی طرف سے تازہ جاری کردہ رپورٹ کے مطابق مزيد 75 افراد زندگى کى بازى ہار گئے، سندھ ميں 53، خيبرپختونخوا میں 16افراد لقمہ اجل بن گئے،بلوچستان میں 2، گلگت بلتستان میں 5 ہلاکتیں ہوئى۔

رپورٹ کے مطابق 24 گھنٹوں میں 59 افراد زخمى ہوئے، 14 جون سے اب تک ملک بھر میں کل 1136 افراد زندگى کى بازى ہار گئے،سب سے زیادہ سندھ میں 402 افراد چل بسے، بلوچستان 244، کے پى 258، آزاد کشمير میں جاں بحق ہونے والوں کى تعداد 41 ہوگئی۔

رپورٹ کے مطابق ملک بھر میں 501 مرد، 227 خواتين اور 386 بچے مارے گئے، اب تک کل زخميوں کى تعداد 1634 ہو گئى، سندھ زخمى افراد میں سرفہرست تعداد 1055 پہنچ گئی، کے پی 338، پنجاب 105 بلوچستان میں 110 افراد زخمی ہوئے، سیلاب سے 734179 مکانات جزوی اور 317391 مکمل طور پر تباہ ہوئے۔

این ڈی ایم اے کے مطابق ملک بھر میں 7 لاکھ 35 ہزار 375 مال مویشی سیلاب میں بہہ گئے،چوبيس گھنٹوں کے دوران 14 کلو ميٹر سڑک کو نقصان پہنچا، سندھ میں بارشوں اور سيلاب کے باعث 2328 کلوميٹر سڑک کو نقصان پہنچا،بلوچستان میں اب تک 1000 کلو ميٹر سڑک حاليہ بارشوں اور سيلاب سے تباہ ہوئى۔

ملک بھر کے 162 پلوں کو سيلاب سے نقصان پہنچا، دریائے سندھ میں اونچے درجے کا سیلاب ہے، چشمہ، تونسہ، گڈو اورسکھر بیراج پر اونچے درجے کا سیلاب ہے،دریائے کابل نوشہرہ کے مقام پر انتہائی اونچے درجے کا سیلاب ہے۔

سندھ

NDMA

FEDERAL CABINET

Monsoon Rain

BALOCHISTAN FLOOD

FLOOD 2022

Tabool ads will show in this div