تحائف ظاہر نہ کرنے پر عمران خان کی نااہلی کے ریفرنس پر کارروائی کا آغاز

عمران خان کے وکیل کو جواب جمع کرانے کیلئے 22 اگست تک مہلت

توشہ خانہ تحائف ظاہر نہ کرنے پر عمران خان کی نااہلی کے ریفرنس پر الیکشن کمیشن میں کارروائی کا آغاز ہوگیا۔

عمران خان کیخلاف توشہ خانہ تحائف ظاہر نہ کرنے پر الیکشن کمیشن میں نااہلی ریفرنس پر کارروائی کا آغاز ہو گیا ہے، اس حوالے سے الیکشن کمیشن میں عمران خان کے خلاف توشہ خانہ نااہلی ریفرنس پر سماعت ہوئی۔

عمران خان کے وکیل نے پہلے تو تحریری مواد نہ ملنے کا عذر پیش کیا، پھر نکتہ اٹھایا کہ عمران خان رکن اسمبلی نہیں ہیں اس لئےانہیں نوٹس جاری ہی نہیں ہو سکتا، کوئی رکن استعفے کا اعلان کرکے ایوان میں نہ جائے تو استعفی منظور تصور ہوتا ہے۔

چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجا نے کہا کہ کاغذوں میں عمران خان اب بھی رکن اسمبلی ہیں، بار بار کہا جاتا ہے کہ الیکشن کمیشن استعفے منظور نہیں کررہا۔

عمران خان کے وکیل نے باربار استعفے کا ذکر کیا تو چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجا نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بیانات نہ دیں سابق ڈپٹی اسپیکر نے کوئی استعفیٰ بھیجا ہو تو دکھا دیں، یہاں قانونی بات کریں اور باقی گفتگو ٹی وی پر کیا کریں۔

وکیل نے ریفرنس کی کاپی اور جواب جمع کرانے کیلئے وقت مانگا تو کمیشن نے سماعت 22 اگست تک ملتوی کر دی۔

مدعی محسن شاہنواز رانجھا

ریفرنس کے مدعی محسن شاہنواز رانجھا نے نوازشریف کی نااہلی والا فیصلہ اب عمران پر لگنے کی پیش گوئی کرتے ہوئے کہا ہے کہ جو رسیدیں پہلے آپ اپنے سیاسی مخالفین سے مانگتے تھے اب آپ کے رسیدیں دینے کا وقت آ گیا ہے۔

محسن شاہنواز نے کہا کہ اگر نواز شریف اپنے بچوں سے تنخواہ ظاہر نہ کرنے کی بنیاد پر نااہل ہو سکتا ہے، تو عمران خان نے تو واضح جھوٹ بولا ہے، اب ثاقب نثار کا جو فیصلہ ریکارڈ پر موجود ہے عمران خان پر بھی لگے گا۔

محسن شاہنواز نے طنزیہ پنجاب میں کہا ہن خان صاب تُسی رسیداں کڈو گے ) اب عمران خان صاحب آپ بھی رسیدیں نکالیں گے۔

واضح رہے کہ چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کے خلاف توشہ خانہ سے لئے گئے تحائف ظاہر نہ کرنے پر پی ڈی ایم کے 6 ارکان قومی اسمبلی نے نااہلی ریفرنس دائر کر رکھا ہے، جس میں عمران خان کیخلاف آرٹیکل 63 کے تحت کارروائی کی استدعا کی گئی ہے۔

توشہ خانہ ریفرنس میں بڑے انکشافات

عمران خان کی نا اہلی کیلئے حکومتی رہنما محسن شاہ نواز رانجھا کی جانب سے الیکشن کمیشن میں دائرتوشہ خانہ ریفرنس میں چشم کشا انکشافات سامنے آئے ہیں۔

پی ٹی آئی حکومت کے ابتدائی 6 ماہ میں 10 کروڑ روپے مالیت کے تحائف صرف 20 فیصد قیمت پر رکھ لیے گئے جبکہ کروڑوں روپے کی قیمتی گھڑیوں اور لاکھوں روپے والی انگوٹھیوں کی بھی انتہائی معمولی ادائیگی کی گئی۔

عمران خان نے توشہ خانہ سے جو مفتا لگایا اس میں ساڑھے 3ہزار روپے کاٹی سیٹ، 30 ہزارکا ٹیبل میٹ، 30ہزارکا لاکٹ، ساڑھے3ہزار کی ٹیبل واچ، کارڈ ہولڈر اور پیپرویٹ اور 30ہزار کے پرفیومز اور عود کی لکڑی شامل ہے۔

رپورٹ کے مطابق ایک لاکھ 14 ہزار روپے مالیت کے مخلتف قسم کے گلدانوں اور ایک لاکھ 11 ہزار روپے مالیت کے 6 وال ہینگنگز کی بھی کوئی قیمت ادا نہ کی جبکہ 2 لاکھ 18 ہزار روپے قیمت والے 12 ڈیکوریشن پیسز کی بھی ایک پائی نہ دی۔

توشہ خانے سے مفت اٹھائے گئے سامان میں ایک لاکھ 33 ہزار روپے مالیت کے 6 قالین بھی شامل ہیں۔ 5،5ہزار کے دو خطاطی کے فن پارے، ٹرک کا ماڈل ، 20 ہزار کا لاکٹ اور 5 ہزار کا لیڈیز بیگ بھی مفت ہڑپ لیا۔

توشہ خانے سے مفت اٹھائے گئے سامان میں 20،25 ہزار روپے مالیت کے خانہ کعبہ کے ماڈل، 6 ہزار کے بیت اللہ کی چابی کے ماڈل، ہزار مالیت کے مکہ کلاک ٹاور ماڈل کے علاوہ کھجوریں، 2 جائےنماز، 2 تسبیح اور6 بوتل شہد پر مشتمل 2 صندوقوں کی بھی کوئی قیمت ادا نہ کی گئی جن کی مالیت 29 ہزار 700 روپے ہے۔

ساڑھے 7 ہزار روپے مالیت کے سری لنکا سے آئے قیمتی پتھر اور تسبیح ،27 ہزار کا شطرنج بورڈ اور 22 ہزار روپے کا نادر پیالہ بھی بغیر ادائیگی حاصل کر لیا۔

عمران خان نے 14کروڑ20لاکھ مالیت کے تحائف کے بدلے صرف 3 کروڑ81 لاکھ ادائیگی کی۔

قیمتی گھڑیوں، پرفیومز، مردانہ و زنانہ کپڑوں، زیورات اور دیگر تحائف سے بھرے 3 کروڑ 10 لاکھ 400 روپے مالیت کے 6 صندوقوں کے صرف ایک کروڑ 54 لاکھ 91 ہزار 450 روپے ادا کیے گئے۔

اِن تحائف میں سے ایک عمران خان جبکہ باقی تمام سابق خاتون اول بشریٰ بی بی کو دئیے گئے۔

ساڑھے 8 کروڑ روپے کی گریف گھڑی صرف ایک کروڑ 70لاکھ ، 15لاکھ کی رولیکس گھڑی 2 لاکھ 49 ہزار میں ہتھیا لی گئی۔ 56 لاکھ کے کف لنکس، 15لاکھ کاپین اور87ل اکھ کی انگوٹھی کی صرف 20 فیصد ادائیگی کی گئی۔

عمران خان نے توشہ خانہ سے 38 لاکھ روپے والی رولیکس گھڑی کےصرف 7 لاکھ 54 ہزار، 19لاکھ کی گھڑی کے 9 لاکھ 35ہزار ادا کیے۔

اسی طرح 17 لاکھ 23 ہزار روپے کی رولیکس گھڑیاں، آئی فون، مردانہ کپڑے، قیمتی پرفیومز اور بٹوے کے صرف 3 لاکھ 38 ہزار600 ادا کیے گئے۔

عمران خان نے 32 ہزار روپے کا قالین صرف ایک ہزارروپے ، ایک لاکھ 10 ہزار مالیت والا ڈنرسیٹ 40 ہزار جب کہ ایک لاکھ 20 ہزار مالیت کا ایک ڈنر سیٹ اور کف لنکس کی جوڑی صرف 45 ہزار میں رکھ لیے۔

PTI

IMRAN KHAN

ELECTION COMMISION OF PAKISTAN (ECP)

Toshakhana

Tabool ads will show in this div