پیسے نہ دینے پر سابق شوہر نے خاتون کا گلا کاٹ دیا

واقعہ کراچی میں پیش آیا، ویڈیو وائرل ہوگئی

کراچی میں ایک شخص نے پیسے نہ دینے پر تیز دھار آلے سے اپنی سابقہ بیوی کا سرعام گلا کاٹ دیا۔

گزشتہ روز سہراب گوٹھ کے قریب ایک شخص نے دن دہاڑے ایک خاتون کا گلا تیز دھار آلے سے کاٹا اور موٹر سائیکل پر فرار ہوگیا۔ موقع پر موجود ایک شہری نے واقعے کی ویڈیو بناکر سوشل میڈیا پر جاری کردی۔

ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ایک خاتون زخمی حالت میں سڑک پر بیٹھی مدد مانگ رہی ہے جبکہ ایک شخص ہاتھ میں چھری لئے بار بار اس کی طرف بڑھ رہا لیکن موقع پر موجود افراد شور مچا رہے ہیں تاکہ وہ بھاگ جائے۔

ویڈیو میں نظر آرہا ہے کہ اسی دوران یہ شخص اپنا گلا کاٹنے کی بھی ناکام کوشش کرتا ہے، تاہم اس موقع پر ایک شخص ہوائی فائرنگ کرتا ہے جس کے بعد ملزم موٹر سائیکل پر بیٹھ کر فرار ہو جاتا ہے۔

خاتون کو زخمی حالت میں عباسی شہید اسپتال منتقل کیا گیا جہاں اس کی شناخت مریم دختر ابراہیم کے نام سے ہوئی۔

واقعے سے متعلق تفصیلات بتاتے ہوئے پولیس سرجن کراچی ڈاکٹر سمعیہ سید نے سماء ڈیجیٹل کو بتایا کہ ایک 42 سالہ خاتون کو زخمی حالت میں عباسی شہید اسپتال منتقل کیا گیا، جہاں ایک خاتون میڈیکو لیگل افسر نے ان کا معائنہ کیا۔

پولیس سرجن کے مطابق خاتون کی گردن سے خون تیزی سے بہہ رہا تھا۔ میڈیکو لیکگل افسر نے معائنے کے بعد اپنی رائے دیتے ہوئے لکھا کہ تیز دھار آلے سے خاتون کا گلا کاٹا گیا ہے۔

عباسی شہید اسپتال میں سہولیات کے فقدان کے باعث مریم کو ابتدائی طبی امداد کے بعد جناح پوسٹ گرجویٹ میڈیکل سینٹر منتقل کردیا گیا۔

سماء ڈیجیٹل نے زخمی خاتون مریم کے بیٹے سمیع سے رابطہ کیا، جنہوں نے بتایا کہ وہ سہراب گوٹھ کے رہائشی ہیں۔ سمیع کا کہنا ہے کہ ان کی والدہ پولیو ہیلتھ ورکر ہیں جو منگل کے دن صبح ساڑھے 7 بجے گھر سے اپنے دفتر جانے کیلئے نکلی تھی۔

سمیع کے مطابق وہ بھی اپنے دفتر جانے کی تیاری کر رہا تھا کہ اسی دوران اس کا ایک دوست گھر پر آیا اور بتایا کہ کسی نے اس کی والدہ کا گلا کاٹ دیا ہے۔

سمیع کا کہنا ہے کہ اطلاع ملنے پر وہ بھاگتا ہوا جائے وقوعہ پہنچا تو دیکھا کہ اس کی والدہ خون میں لت پت پڑی ہیں، جنہیں وہ ایمبولینس کے ذریعے عباسی شہید اسپتال لے گیا۔

سمیع نے بتایا کہ اسپتال منتقلی کے دوران اس کی والدہ نے بتایا کہ اس پر غلام نبی نے حملہ کیا ہے۔ زخمی خاتون کے بیٹے کا کہنا ہے کہ غلام نبی اس کا سوتیلا باپ ہے اور اس کی والدہ نے اس سے آٹھ سال قبل دوسری شادی کی تھی لیکن تین ماہ قبل خلع حاصل کرلی تھی۔

سمیع نے مزید کہا کہ ان کے والد محمد عارف کا 2009ء میں ہارٹ اٹیک کے باعث انتقال ہوگیا تھا، جس کے بعد بہن بھائیوں کے اصرار پر اس کی والدہ نے دوسری شادی غلام نبی سے کی۔

سمیع کے مطابق غلام نبی کی اس کی والدہ سے تیسری شادی تھی، غلام نبی کی پہلی بیوی نے اس سے خلع لی اور دوسری نامعلوم وجوہات کے باعث انتقال کرگئی تھی، جس کے بعد اس نے تیسری شادی اس کی والدہ سے کرلی۔

سمیع نے بتایا کہ غلام نبی کوئی کام نہیں کرتا تھا جبکہ اس کی والدہ محنت کرکے گھر کا خرچہ چلاتی ہیں، غلام نبی سے تنگ آکر اس کی والدہ نے 3 ماہ پہلے اس سے خلع حاصل کرلی تھی۔

سمیع کا مزید کہنا ہے کہ غلام نبی خلع کے بعد بھی آئے روز ان کے گھر آکر پیسوں کا تقاضا کرتا اور پیسے نہ ملنے پر جان سے مارنے کی دھمکی دیتا تھا۔

سمیع کا کہنا ہے کہ چند روز قبل بھی ملزم جب ان کے گھر آیا تو اس کی والدہ سے پیسوں کا تقاضہ کیا لیکن جب اس کی والدہ نے انکار کیا تو ملزم نے دھمکی دی تھی کہ وہ انہیں قتل کر دیگا۔

جناح پوسٹ گریجویٹ میڈیکل سینٹر میں طبی امداد کے بعد متاثرہ خاتون کو ڈسچارج کردیا گیا ہے، واقعے کا مقدمہ تاحال درج نہیں ہوسکا۔

کراچی

WOMAN MURDER ATTEMPT

Tabool ads will show in this div