سندھ میں بلدیاتی انتخابات کا دوسرا مرحلہ رکوانے کی استدعا مسترد

عدالت کا حلقہ بندیوں کے معاملے پر متعلقہ فورم سے رجوع کرنے کا حکم

سپریم کورٹ نےایم کیو ایم پاکستان کی سندھ میں بلدیاتی انتخابات کا دوسرا مرحلہ رکوانے کی استدعا مسترد کر دی۔

متحدہ قومی موومنٹ سندھ میں بلدیاتی الیکشن کا دوسرا مرحلہ ، رکوانے میں کامیاب نہ ہو سکی۔ کراچی، حیدرآباد سمیت 16 اضلاع میں پولنگ 28 اگست کو ہی ہوگی۔ سپریم کورٹ نے فیصلہ سنا دیا۔

ایم کیو ایم کو حلقہ بندیوں کے معاملے پر جنگ بھی متعلقہ فورم پر لڑنے کا کہا ۔ ایڈووکیٹ جنرل سندھ نے میئر کراچی کا الیکشن ، سیاسی جماعتوں کا اصل مسئلہ قرار دیا۔

چیف جسٹس عمرعطا بندیال نے ایم کیو ایم کے وکیل فروغ نسیم سے کہا سندھ ہائی کورٹ کے فیصلے میں واضح ہے کہ جون تک آپ نے کچھ نہیں کیا ، الیکشن کمیشن اور حلقہ بندی کمیٹی کے ساتھ بیٹھ کر معاملہ حل کریں۔

عدالت نے قرار دیا کہ ہائی کورٹ میں نہ اٹھائے گئے نکات اپیل میں براہ راست نہیں سنے جاسکتے، الیکشن کسی صورت ملتوی نہیں کریں گے۔

دوسری جانب جی ڈی اے کی ڈاکٹر فہمیدہ مرزا نے انتخابی مواد کا آڈٹ کرانے کی استدعا کی تو چیف جسٹس نے کہا آپ کی درخواست میں دم ہوا تو سن لیں گے جبکہ پی ٹی آئی کے وکیل بیرسٹر صلاح الدین نے سپریم کورٹ کے یکم فروری کے حکم پر عملدرآمد نہ ہونے کا نکتہ اٹھایا تو عدالت نے اسے غیرمتعلقہ قرار دیتے ہوئے رد کر دیا۔

جماعت اسلامی کراچی کے امیر حافظ نعیم الرحمان کا کہنا تھا کہ بینچ نے یہ تسلیم کیا کہ الیکشن اپنے وقت پر ہوں گے اس پر میں اہل کراچی کو مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ اب فرار کے راستے تمام تمام پارٹیوں کے لئے بند ہوگئے ہیں۔

SUPREME COURT OF PAKISTAN

MQM Pakistan

SINDH LG POLLS

Tabool ads will show in this div