‘پاکستان 2025 تک خشک سالی کا شکار ہو جائےگا’

ہمیں اپنے منصوبوں کی ترجیحات تبدیل کرنی ہوگی، شیری رحمان

وفاقی وزیر موسمیاتی تغیر شیری رحمان نے کہا ہے کہ پاکستان 2025 تک خشک سالی کا شکار ہو جائے گا۔

اسلام آباد میں موسمیاتی تبدیلی کے زراعت پر اثرات کے موضوع پر کانفرنس سے خطاب کے دوران شیری رحمان نے کہا کہ ہمارے سسٹم میں پانی کم ہو گیا ہے،پاکستان 2025 تک خشک سالی کا شکار ہو جائے گا۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ دنیا میں بڑے ڈیمز کی تعمیر کا رجحان کم جب کہ چھوٹے ڈیمز کا رجحان بڑھ رہا ہے، بڑے ڈیمز کی تعمیر کیلئے بڑی تعداد میں فنڈز درکار ہوتے ہیں۔ بھارت میں بڑے ڈیمز کے خلاف لوگ احتجاج کرتے ہیں۔

شیری رحمان نے کہا کہ ہمارے ڈیمز کے منصوبے 10 سے 15 سال تک مکمل نہیں ہوتے، ہمارے پاس بڑے ڈیمز بنانے کے لئے نہ تو وسائل ہیں اور نہ ہی وقت، ہمیں اپنے منصوبوں کی ترجیحات تبدیل کرنی ہوگی، ہمیں بھی اپنے وسائل مدنظر رکھتے ہوئے چھوٹے ڈیمز بنانے چاہیئں۔

پاکستان موسمیاتی تغیر کا براہ راست شکار

پاکستان کا شمار دنیا کے ان 10 مالک میں ہپوتا ہے جو عالمی موسمیاتی تغیر سے براہ راست متاثر ہورہے ہیں۔

رواں برس غیر متوقع گرمی کے باعث کئی گلیشیئرز زیادہ تیز تفتاری پگھلے جس کی وجہ سے شمالی علاقوں میں سیلابی صورت ھال پیدا ہوئی۔

اس کے علاوہ رواں برس سندھ اور بلوچستان میں اب تک سالانہ اوسط سے کئی گنا زیادہ بارش ہوچکی ہے۔

دوسری جانب ماہرین کا کہنا ہے کہ موسمیاتی تغیر کی وجہ سے پاکستان کو مستقبل میں پانی کی کمی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

Tabool ads will show in this div