پی ٹی آئی نے شہباز گل کو لاوارث چھوڑ دیا، وزیر دفاع

جب سے عمران حکومت گئی اداروں پر حملہ کیا جارہا ہے، خواجہ آصف

وزیر دفاع خواجہ آصف کہتے ہیں کہ پی ٹی آئی نے شہباز گل کو لاوارث چھوڑ دیا ہے، کل تک جو منظور نظر تھا آج اسے ‘‘بلی’’ چھڑا دیا گیا، جب سے عمران حکومت گئی اداروں پر حملہ کیا جارہا ہے۔

سماء کے پروگرام ندیم ملک لائیو میں خصوصی گفتگو کرتے ہوئے وزیر دفاع خواجہ محمد آصف نے کہا کہ شہباز گل کے بیان میں ایک دو جملے نہیں پوری بات میں بغاوت پر اکسایا جارہا ہے، انہوں نے اکیلے ادارے پر حملہ نہیں کیا یہ اسکرپٹڈ تھا، شہباز گل نے جو کہا یہ ان کی پارٹی کا مؤقف تھا، پی ٹی آئی نے شہباز گل کو لاوارث چھوڑ دیا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی رہنماؤں کے بیانات سے لگتا ہے سب دوری اختیار کررہے ہیں، عمران خان کا بھی شہباز گل معاملے پر گول مول بیان آیا، انہیں چیف آف اسٹاف سے ڈی موٹ کردیا گیا، کل تک جو منظور نظر تھا اسے “بلَی” چڑھا دیا گیا۔

خواجہ آصف نے مزید کہا کہ جب سے عمران حکومت گئی اداروں پر حملہ کیا جارہا ہے، عمران خان کے ساتھ دوسرے رہنماء بھی ایسا کرتے تھے، سوچے سمجھے طریقے سے یہ سب کیا گیا ہے، سیاست میں بھی ایک لائن ہونی چاہئے، یہ بات کرنی ہے یہ نہیں کرنی۔

ندیم ملک کے ایک سوال پر ان کا کہنا ہے کہ نواز شریف یا مریم نواز نے انفرادی طور پر افسران کے نام ضرور لئے تاہم اداروں کو کسی موقع پر نقصان پہنچانے کی کوشش نہیں کی، جنرل باجوہ نے کہا کہ مجھ پر نام لے کر تنقید کی جاتی ہے جس کی مجھے پرواہ نہیں، لیکن جب ادارے پر بات کی جائے گی تو میں شہداء کے لواحقین کو کیا جواب دوں گا۔

شہباز گل کو معافی دینے سے متعلق سوال پر وزیر دفاع نے کہا کہ اگر مفاہمت کی بات ہوتی ہے تو اور بات ہے مگر موجودہ صورتحال میں ایسی باتیں کرکے دشمن کے ایجنڈے کو تقویت دی جارہی ہے، بھارت تو پہلے ہی کہہ رہا ہے کہ ہمیں پیسہ لگانے کی ضرورت نہیں ہمارا ایجنڈا تو اندر سے پورا ہورہا ہے۔

افغانستان میں ایمن الظواہری پر حملے سے متعلق سوال پر خواجہ آصف کا واضح طور پر کہنا ہے کہ یہ بھی پاکستان کو بدنام کرنے کی سازش ہے، اس میں پاکستانی فضائی یا زمینی حدود استعمال ہوئی اور نہ ہی ہم نے انٹیلی جنس شیئرنگ کی۔

وزیر دفاع نے مزید کہا کہ نائن الیون کے بعد سے خطے کے تمام ممالک نے نیٹو کو سہولیات فراہم کیں، جن میں ہم بھی شامل ہیں، اب افغانستان میں افغانوں کی اپنی حکومت قائم ہوئی ہے وہ بڑی کامیابی کے ساتھ آگے بڑھ رہے ہیں، اس صورتحال میں ہمارا کسی کا ساتھ دینے کا کوئی جواز ہی نہیں بنتا، خطے کے دیگر ممالک کی جانب سے سہولت فراہم کرنے کا سلسلہ جاری ہے، ڈرون خطے کے کسی اور ملک سے اڑا، یہ بھی امکان ہے کہ افغانستان کے اندر بھی یہ سہولت موجود ہو۔

تحریک طالبان پاکستان سے متعلق سوال پر انہوں نے کہا کہ ٹی ٹی پی اور امن و امان کی پہلی ذمہ داری صوبائی حکومت کی ہے، خیبرپختونخوا میں تحریک انصاف کی حکومت ہے، عمران خان ماضی میں طالبان کو خوش آمدید کہتے رہے ہیں، اگر کالعدم ٹی ٹی پی کی پیشقدمی ہوئی ہے تو اس کی انشاء اللہ جلد ہی روک تھام ہوجائے گی، ان میں بھی بہت سے گروپ ہیں، پارلیمنٹ کو ماضی قریب میں بریفنگ دی گئی کہ ان سے بات چیت جاری ہے۔

آرمی چیف کی تعیناتی پر وزیر دفاع خواجہ آصف کا کہنا ہے کہ فوجی ترقیاں، تبادلے اور تقرر پر عوامی سطح پر زیر بحث لانے کا سلسلہ بند ہونا چاہئے، اسی طرح عدلیہ کا بھی ایک تقدس ہے، پارلیمنٹ اس پر متضاد رائے پائی جاتی ہے کہ عدالتی تقرریوں کے معاملے پر پارلیمنٹ کو غیر مؤثر کردیا گیا ہے، ان دونوں اداروں کا تقدس اس بات کا متقاضی ہے کہ انہیں عوامی سطح پر زیر بحث نہ لایا جائے۔

انہوں نے کہا کہ ملک کے جو بھی مسائل ہیں بات چیت سے ہی حل ہوسکتے ہیں، ٹکراؤ یا تصادم سے نہیں۔

عمران خان کے خلاف کارروائی پر وزیر دفاع کا کہنا ہے کہ اسرائیل، امریکا اور بھارت سے پیسے لئے گئے، عمران خان نے بطور وزیراعظم تحفے لیکر بیچ دیئے، لندن سے بھی 190 ملین پاؤنڈ آئے، یہ پیسہ ایک لائبیلیٹی اکاؤنٹ میں آیا، میں نے جاوید اقبال کو نیشنل کرائم ایجنسی کا خط دکھایا، جاوید اقبال کو کہا 821 کی ریکوری جعلی ہیں یہ اس میں نہیں ہیں، عمران خان کیخلاف اور بھی بہت اسکینڈل موجود ہیں۔

IMRAN KHAN

MILITARY EXERCISE

SHAHBAZ GILL

DEFENSE MINISTER KHWAJA ASIF

Tabool ads will show in this div