ارشد ندیم کے کیریئر پر مختصر نظر

سونے کا تمغہ حاصل کرکے شہہ سرخیوں میں جگہ بنالی

میاں چنوں سے تعلق رکھنے والے ارشد ندیم نے جیولن تھرو میں پاکستان کا نام ہمیشہ روشن کیا ہے۔ وہ عالمی سطح پر ان مقابلوں میں کئی بار پاکستان کے لیے میڈلز جیت چکے ہیں تاہم کامن ویلتھ گیمز میں ارشد ندیم نے سونے کا تمغہ حاصل کرکے شہہ سرخیوں میں جگہ بنالی ہے۔

برمنگھم میں کامن ویلتھ گیمز میں پاکستان کےایتھلیٹ ارشد ندیم نے جیولن تھرو کے فائنل میں گولڈ میڈل جیت لیا۔ ارشد ندیم نے سب سے لمبی نوے اعشاریہ ایک آٹھ میٹر کی تھرو کی۔

ارشد ندیم 5 بھائیوں میں تیسرے نمبر پر ہیں۔ انھوں نے 2 جنوری 1997 میں آنکھ کھولی اور ان کے والد کنٹریکٹر ہیں۔ ارشد نے پنجاب یوتھ فیسٹول میں کئی گولڈ میڈلز حاصل کئے۔ انھوں نے انٹربورڈ ایونٹ میں گولڈ میڈل حاصل کرنے کےبعد قومی سطح پر پاکستان کی نمائندگی کی۔

ارشد ندیم کو سال 2016 میں ورلڈ ایتھلیٹکس کی جانب سے اسکالرشپ دی گئی جس کے بعد انھوں نے ماریشیس میں بین الاقوامی سینٹر میں ٹریننگ حاصل کی۔

جون 2016 میں پاکستانی ایتھلیٹ ارشد ندیم نے ویتنام میں ہونے والی ایشین جونیئر ایتھلیٹکس چیمپئن شپ میں جیولن تھرو ایونٹ میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 73.40 میٹر تھرو پھینک کر ملک کیلئے کانسی کا تمغہ حاصل کیا تھا۔

مئی 2017 میں ارشد ندیم نے باکو میں ہونے والےاسلامک سالیڈیریٹی گیمز میں 76.33 میٹر دور جیولن پھینک کر کانسی کا تمغہ حاصل کیا۔

اپریل 2018 میں گولڈ کوسٹ آسٹریلیا میں ارشد ندیم نے کوالی فائنگ راؤنڈ میں 80.45 میٹر دور جیولن پھینک کر اپنا ریکارڈ بہتر کیا۔

سال 2019 میں دوحہ میں ورلڈ ایتھلیٹکس چیمپین شپ میں ارشد ندیم نے 81.52 میٹر کے فاصلے پر جیولن پھینک کر اپنا اور قومی ریکارڈ قائم کرڈالا۔

اس ہی سال نومبر میں پشاور میں ہونے والے 33ویں نیشنل گیمز میں واپڈا کی جانب سے ارشد ندیم نے 83.65 میٹر دور جیولن پھینک کر سونے کا تمغہ حاصل کیا اور قومی ریکارڈ قائم کردیا۔

دسمبر 2019 میں، نیپال میں ہونے والے ساؤتھ ایشین گیمز میں ارشد ندیم نے 86.29 میٹر دور جیولن پھینک کر سونے کا تمغہ حاصل کیا۔

پچھلے برس ٹوکیو اولمپکس میں جیولین تھرو ایونٹ میں گولڈ ميڈل کيلئے12 ايتھليٹس ميں مقابلہ تھا۔ اس ایونٹ میں ارشد نديم پاکستان کے ميڈل کی واحد اميد تھے۔

انھوں نے پہلی کوشش میں 82.40 میٹر تک جیولین تھرو کی۔ دوسری کوشش میں ارشد کی جیولین مطلوبہ لائن سے آگے نہ جاسکی اور فاؤل ہوگیا تھا۔ ارشد ندیم نے تیسری کوشش میں 84.62 میٹر تک جیولین تھرو کی تھی۔ پہلے 12 ایتھلیٹس کےمقابلے میں ارشد چوتھے نمبر پر آئے اور انھوں نے ٹاپ8 کھلاڑیوں میں جگہ بنائی تھی۔

جیولین تھرو ایونٹ میں ٹاپ 8 ایتھلیٹس کے مقابلے میں پہلی کوشش میں ارشد ندیم نے 82.91 میٹر تک جیولین تھرو کی۔ دوسری کوشش میں انھوں نے 81.98 میٹرتک جیولین تھرو کی۔ تیسری کوشش میں ارشد ندیم ڈس کوالی فائی ہوگئے تھے۔

پچھلے ماہ ورلڈ ایتھلیٹکس چیمپئن شپ میں جیولن تھرو کے فائنل مقابلے میں میاں چنوں سے تعلق رکھنے والے پاکستان کے ارشد ندیم ( Arshad Nadeem ) پانچویں پوزیشن حاصل کرسکے تھے۔ ارشد ندیم نے 86.16 میٹر کی تھرو کی، تاہم یہ تھرو ارشد ندیم کی اس سیزن میں بہترین تھرو بھی تھی۔

اس سے قبل ارشد ندیم نے گروپ بی کوالیفائنگ راونڈ میں 81.71 میٹر تھرو کی جو تیسری باری میں سب سے بہترین تھی۔

Arshad Nadeem

JAVELIN THROW

commonwealth games 2022

Tabool ads will show in this div