پی ٹی آئی کے اراکین اسمبلی استعفیٰ دے دیں ورنہ نااہلی کا سامنا کرنا پڑے گا، اسحاق ڈار

پی ٹی آئی پر پابندی کی تلوار لٹکنا شروع ہوگئی ہے، سابق وزیر خزانہ

سابق وزیر خزانہ اور ن لیگ کے رہنما اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ تحریک انصاف کے ایم پی ایز اور ایم این ایز رضا کارانہ طور پر اپنی ممبر شپ سے استعفے دے دیں تو ان کا صرف ایک سال کا نقصان ہوگا، ورنہ انہیں نااہلی کا سامنا کرنا پڑے گا۔

لندن میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے سابق وزیر خزانہ اور مسلم لیگ ن کے رہنما اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن کے فیصلے کے بعد تحریک انصاف پر فارن فنڈنگ ثابت ہوچکی ہے، اور اب پی ٹی آئی پر پابندی کی تلوار لٹکنا شروع ہوگئی ہے۔

اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف کے ایم پی ایز اور ایم این ایز رضاکارانہ طور پر اپنی ممبر شپ سے استعفے دے دیں تو ان کا صرف ایک سال کا نقصان ہوگا، اور ان پر پابندی نہیں لگے گی، اور وہ نااہلی سے بچ سکتے ہیں۔

اسحاق ڈار نے کہا کہ فارن فنڈنگ کا معاملہ اب سپریم کورٹ کے پاس بھیج دیا گیا ہے اور اگر عدالت کا فیصلہ آگیا تو ایسے ممبران جو تحریک انصاف سے جڑے ہوں گے ان کی ممبر شپ تو ختم ہوگی ساتھ ہی انہیں 4 سال تک نااہلی کا بھی سامنا کرنا پڑے گا۔

سابق وفاقی وزیر نے کہا کہ عمران خان پر اکاؤنٹس چھپانے کا الزام اب ثابت ہوچکا ہے، وہ 62 ون ایف کے تحت نااہل ہوسکتے ہیں، ماضی میں اسی بنیاد پر نوازشریف، جہانگیر ترین اور فیصل واوڈا کا فیصلہ بھی ہوچکا ہے، اور یہ تینوں تاحیات پابندی کا سامنا کررہے ہیں، عمران خان تو صرف توشہ خانہ کیس میں بھی نااہل ہوسکتے ہیں، اس میں ان کی پارٹی نہیں بلکہ وہ خود اکیلے ہی ملوث ہیں۔

Ishaq Dar

PTI

IMRAN KHAN

Tabool ads will show in this div