بھارت: پولیس کا اپوزیشن کے مارچ پر دھاوا، راہول گاندھی سمیت 200 گرفتار

بھارت میں جمہوریت نہیں، ہر ادارہ RSS کے کنٹرول میں ہے، راہول گاندھی

بھارت میں پولیس اپوزیشن کے احتجاج پر ٹوٹ پڑی، راہل گاندھی سمیت کئی اپوزیشن رہنماؤں کو حراست میں لے لیا۔

کانگریس کی جانب سے مہنگائی کے خلاف پارلیمنٹ ہاؤس سے وزیراعظم نریندر مودی کی رہائش گاہ تک مارچ کیا جارہا تھا لیکن پولیس نے انہیں وجے چوک پر ہی روک دیا اور راہل گاندھی سمیت کئی رہنماؤں کو حراست میں لے لیا، حکومت نے مارچ کو روکنے کیلئے دفعہ 144 نافذ کردی اور کانگریس کو اس مارچ کی اجازت نہیں دی۔

پولیس نے 60 سے زائد ارکان اسمبلی سمیت 200 مظاہرین کو گرفتار کرکے تھانوں میں منتقل کردیا، کانگریس کی سینئر خاتون رہنما پریانکا گاندھی کو گھسیٹ کر پولیس وین میں ڈالا گیا۔

زیرحراست راہول گاندھی نے پولیس گردی کو جمہوریت کی موت قرار دیتے ہوئے کہا کہ بھارت میں جمہوریت نہیں آمریت ہے، حکومت عوام کی طاقت سے خوفزدہ ہے۔

راہل گاندھی نے کہا کہ آج بھارت میں ہر ادارہ آر ایس ایس کے کنٹرول میں ہے، ہم صرف ایک سیاسی پارٹی کے خلاف نہیں لڑ رہے ہیں، ہم بھارت کے پورے انفراسٹرکچر کے خلاف لڑ رہے ہیں۔

پولیس گردی کے خلاف دہلی، ممبئی، چنئی، بھوپال، گوہاٹی، چندی گڑھ سمیت کئی شہروں میں مظاہرے اور دھرنے دیے جارہے ہیں، چندی گڑھ میں بھی مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئےواٹر کینن کا استعمال کیا گیا جس سے کئی افراد زخمی ہوگئے۔

congress

INDIA PROTEST

Tabool ads will show in this div