دہشتگردی کے فروغ سمیت دیگر الزامات پر بھارت میں ہزاروں twitter اکاؤنٹس بند

40 ہزار 982 اکاؤنٹس کو فحاشی اور جنسی استحصال پر بند کیا گیا

ٹوئٹر نے قواعد و ضوابط کی خلاف ورزی پر بھارت میں 43 ہزار 140 سے زائد اکائونٹس بند کردیے۔

سوشل میڈیا ویب سائٹ ٹوئیٹر نے منگل کو اپنی ماہانہ رپورٹ میں کہا کہ اس نے 40,982 اکائونٹس سے بچوں کے جنسی استحصال، فحاشی اور اسی طرح کے دیگر مواد کو ہٹادیا اور دہشتگردی کو فروغ دینے پر 2,158 اکائونٹس کو بند کردیا۔

سوشل میڈیا پلیٹ فارم کو 26 مئی سے 25 جون کے درمیان بھارت میں 724 شکایات موصول ہوئیں اور 122 شکایات پر کارروائی کی گئی۔ مئی میں ٹوئیٹر نے بھارتی صارفین کے 46,000 سے زیادہ اکائونٹس پر پابندی لگا دی تھی۔

بھارت کے نئے کے قوانین کے تحت ٹوئٹر کو ملک میں صارفین کی شکایات سے نمٹنے کے بارے میں ماہانہ رپورٹ شائع کرنا پڑتی ہے جس میں ان پر کی گئی کارروائی بھی شامل ہے، ٹوئٹر نے اپنے پلیٹ فارم سے کچھ مواد ہٹانے کے بھارتی حکومت کے حکم کے خلاف گزشتہ ماہ کرناٹک ہائی کورٹ میں درخواست دائرکی تھی۔

بھارتی حکومت نے جون میں ایک خط میں ٹویٹر کو متنبہ کیا تھا کہ اگر وہ مواد کو ہٹانے کے احکامات کی تعمیل نہیں کرے گا تو حکومت سخت کارروائی کرے گی۔

انڈیا

ٹویٹر

SOCIAL MEDIA APP

Tabool ads will show in this div