خیبرپختونخوا حکومت کا انڈسٹریز پراپرٹی ٹیکس ختم کرنے کا اعلان

انڈسٹریز کو ریلیف دینے کے لیے پراپرٹی ٹیکس ختم کیا گیا، صوبائی وزیر خزانہ

خیبرپختونخوا حکومت نے انڈسٹریز پراپرٹی ٹیکس ختم کرنے کا اعلان کردیا۔

خیبرپختون خوا حکومت نے انڈسٹریز پراپرٹی ٹیکس (Industries Property tax) ختم کرنے کا اعلان کردیا ہے۔

صوبائی وزیر کامران بنگش کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے صوبائی وزیر خزانہ تیمور سلیم جھگڑا کا کہنا تھا کہ جب سے اسلام آباد میں حکومت بدلی ہے تمام امور متاثر ہوگئے، افغانستان میں رجیم چینج سے کاروبار پر بھی اثر پڑا ہے۔

کامران بنگش نے کہا کہ کورونا وبا چیلنج کے باوجود بزنس کمیونٹی کے لیے بہترین ماحول فراہم کیا، پہلی بار صوبے میں ٹیکس بڑھایا، سسٹم بہتر بنا کر ریونیو بڑھایا، فنانشل مینجمنٹ کے تمام امور کے حوالے سے وفاقی حکومت کے لیے ہمارے دروازے کھلے ہیں۔

صوبائی وزیر خزانہ کا مزید کہنا تھا کہ انڈسٹریز کو ریلیف دینے کے لیے پراپرٹی ٹیکس ختم کیا گیا ہے، اور اس کا مقصد نظام کو بہتر بنانا ہے، انڈسٹریز کو ریلیف دینے کے لیے تمام وسائل بروئے کار لائیں گے، صنعتی شعبے کو پانچ ارب کے ٹیکسسز کی چھوٹ دی ہے جس سے روزگار بڑھے گا۔

تیمور جھگڑا نے کہا کہ صوبے کی دوسرے دور حکومت میں ہماری توجہ ریونیو بڑھانے پر مرکوز ہے، پی ٹی آئی حکومت نے صوبے کی 30 ارب سے روپے سے ریونیو بڑھا کر 75 ارب روپے تک لے جایا گیا۔

صوبائی وزیر کامران بنگش نے کہا کہ چھوٹے کاروبار کو پروان چڑھانے کے لیے ہم نے درمیانی درجے کے قرضے دئیے ہیں، کنسٹرکشن انڈسٹریز کو پانچ ارب روپے کا ریلیف دیا ہے، پہلی دفعہ انڈسٹریز کو فیول ایڈجسٹمنٹ سے استثنیٰ دیا گیا، انڈسٹریز اٹھے گی تو معیشت اٹھے گا، زنگلی کے مقام پر پشاور کا دوسرا انڈسٹریل اسٹیٹ بنا رہے ہیں۔

Tabool ads will show in this div