توانائی کا شعبہ سب سے زیادہ نقصان کرنے والاحکومتی ادارہ بن گیا

صرف ایک سال میں پاورسیکٹر کو 1072 ارب روپے کا نقصان ہوا، سیکریٹری پاور

سیکرٹری پاور کے مطابق ملک میں سب سے زیادہ نقصان والا ادارہ توانائی کا ہے، جس صرف ایک سال میں ایک ہزار 72 ارب روپے کا نقصان ہوا۔

ریاض مزاری کی زیر صدارت قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے توانی کا اجلاس ہوا، جس میں سیکرٹری پاور نے انکشاف کیا کہ ملک میں سب سے زیادہ نقصان والا حکومتی ادارہ توانائی کا ہے جسے صرف ایک سال میں ایک ہزار 72 ارب روپے کا نقصان ہوا۔

سیکرٹری پاور نے اجلاس میں بتایا کہ گزشتہ ماہ ایل این جی کا اسپاٹ کارگو 40 ڈالر فی ایم ایم بی ٹی یو مل رہا تھا، یہ گیس اتنی مہنگی تھی کہ اس سے بجلی 70 روپے فی یونٹ پیدا ہوتی، پٹرولیم ڈویژن نے فیصلہ کیا کہ اتنی مہنگی ایل این جی نہ خریدی جائے۔

سيکرٹری پاور کا کہنا تھا کہ گزشتہ سال بجلی پیداوار پر 2 ہزار 892 ارب روپے خرچ ہوئے، اور اس کے مقابلے میں حکومت کو صرف 1 ہزار 535 ارب کی وصولیاں ہوئیں، اور اس طرح صرف ایک سال میں پاور سیکٹر کو 1072 ارب کا نقصان ہوا، جس کے بعد پاور سیکٹر سب سے زیادہ نقصان کرنے والا حکومتی ادارہ بن چکا ہے، اور اس کے گردشی قرض کا حجم 2 ہزار 253 ارب روپے ہے۔

سیکرٹری پاور کے مطابق پورے ملک میں 3 کروڑ 65 لاکھ بجلی صارفین ہیں، اور ان میں سے 3 کروڑ 15 لاکھ گھریلو صارفین ہیں، جب کہ ایک کروڑ 20 لاکھ صارفین بجلی قیمت کا ایک تہائی بھی ادا نہيں کرتے، یہ وہ صارفین ہیں جن کو حکومت سبسڈی دیتی ہے۔

Tabool ads will show in this div