قومی اسمبلی و سینیٹ سیکرٹریٹ کے افسروں اور ملازمين پر نوازشات

اسمبلی ملازمين کو 80 کروڑ سے زائد رقم اعزازیہ کے نام پر ملے گی

اسمبلی ملازمين کو ایک سال میں 80 کروڑ سے زائد رقم اعزازیہ کے نام پر ملے گی جب کہ بجٹ سیشن میں ڈیوٹی کرنے پر پارلیمنٹ ملازمین کو چار اضافی تنخواہيں دی جائیں گی۔

حکومت کی جانب سے قومی اسمبلی اور سینیٹ سیکرٹریٹ کے افسران اور ملازمين پر نوازشات کی تیاریاں شروع کردی گئی ہیں۔ اضافی الاؤنس کیلئے تجاویز بیورو کریسی نے مرتب کیں۔

ذرائع کے مطابق اسمبلی ملازمين کو ایک سال میں 80 کروڑ سے زائد رقم اعزازیہ کے نام پر ملے گی، اور بجٹ سیشن میں ڈیوٹی کرنے پر پارلیمنٹ ملازمین کو چار اضافی تنخواہيں دينے کی تیاریاں ہیں، جب کہ افسران و ملازمین کو تنخواہ کے برابر سالانہ 4 اضافی اعزازيئے الگ سے دیئے گئے ہیں۔

تجاویز کے تحت سينيٹ ملازمين کو اضافی تنخواہيں دينے پر 32 کروڑ روپے خرچ ہوں گے۔

دوسری جانب سینیٹ کے مجموعی بجٹ سے ملازمین پر سالانہ 3 ارب سے زائد بجٹ خرچ ہونے کا انکشاف ہوا ہے، اس کے برعکس مختص بجٹ سے ایوان بالا کے سینیٹرز کے سالانہ اخراجات صرف 60 کروڑ روپے ہيں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ملازمین کو اضافی بونس دینے پر قومی خزانے سے سوا ارب سے زائد اضافی خرچ ہوں گے، جب کہ پارليمنٹ کے ملازمين کی تنخواہيں پہلے ہی باقی محکموں کے ملازمين سے دو گنا زیادہ ہيں۔

Parlimentarian

Senate of Pakistan

Tabool ads will show in this div