این سی اے نے بحریہ ٹاﺅن کے ساتھ خفیہ معاہدے کی تفصیلات پاکستان کو فراہم کر دیں

برطانوی نیشنل کرائم ایجنسی کے انٹرنیشنل کرائم یونٹ نے تفصیلات وزارت خارجہ کو ایل میل کیں

برطانیہ کی نیشنل کرائم ایجنسی نے بحریہ ٹاﺅن اور این سی اے کے درمیان ہونے والے خفیہ معاہدے کی تفصیلات پاکستان کے حوالے کر دیں، معاہدے “ڈیڈ آف کانفیڈنشلٹی’’ پر حکومت پاکستان کی طرف سے دستخط کئے گئے۔

تفصیلات کے مطابق حکومت کی طرف سے سابق وزیراعظم عمران خان کے مشیر برائے احتساب مرزا شہزاد اکبر کو معاہدہ کرنے کا اختیار دیا گیا تھا۔

برطانوی نیشنل کرائم ایجنسی اور بحریہ ٹاﺅن کے مابین ہونیوالے اس معاہدے میں ایسٹ ریکوری یونٹ کے سربراہ نے گارنٹر کا کردار ادا کیا۔ خصوصی پیغام رساں کے ذریعے وزیراعظم کے دفتر کو ایک خط اور معاہدے کی کاپی ارسال کی گئی۔

وزارت خارجہ کے خفیہ خط میں انکشاف کیا گیا کہ برطانوی انٹرنیشنل کرپشن یونٹ (آئی سی یو) نے خفیہ معاہدے “ڈیڈ آف کانفیڈنشلٹی” کی کاپی پاکستان کو بھیجی تھی، اس خفیہ معاہدے میں بحریہ ٹاﺅن کے بیرون ملک اثاثوں اور دیگر جائیداد سے متعلق تفصیلات موجود ہیں۔

رپورٹ کے مطابق معاہدے میں احمد علی ملک، ملک ریاض حسین، مبشرہ ملک، مختلف آف شور اور بزنس کمپنیوں کو پارٹی بنایا گیا ہے۔

پاکستان کی وزارت خارجہ کے ای میل پر برطانوی نیشنل کرائم ایجنسی کے انٹرنیشنل کرائم یونٹ کی طرف سے بھیجی جانیوالی معلومات کو خفیہ قرار دیا گیا ہے، جسے کسی تیسرے فریق کے ساتھ شیئر نہیں کیا جا سکتا۔

فریڈم آف انفارمیشن ایکٹ 2000ء کے مطابق این سی اے کی طرف سے اور این سی او کو بھیجے جانے والا تمام مواد خفیہ ہے، جسے مکمل قانونی تحفظ حاصل ہے۔

IMRAN KHAN

bahria town

Malik Riaz

ANTI CORRUPTION

Tabool ads will show in this div