فرانس میں جنگلات کی آگ کے حالیہ دو واقعات میں انسانی غفلت سامنےآگئی

ہزاروں ایکٹر جنگلات تباہ

فرانس میں پچھلے ہفتے لگنے والی جنگلات میں آگ لگنے کے دو واقعات انسانی غفلت کےباعث رونما ہوئے۔

غیرملکی خبرایجنسی نے بتایا کہ عدالتی تحقیقات میں یہ بات سامنے آئی کہ فرانس کے شمال مغرب میں جنگلات میں آگ لگنے کے واقعات جان بوجھ کر رونما ہوئے۔ بریٹنی کےعلاقوں میں ہونےوالے ان واقعات سے متعلق حقائق بھی سامنے آگئے ہیں۔

یہ بھی بتایا گیا کہ ان میں سے ایک آگ لگنے کی وجہ گاڑی میں اسپارک کی وجہ سے شارٹ سرکٹ تھا۔ ماہرین نےخبردار کیا ہے کہ اگر فرانس نے انسانی غفلت سے موسمیاتی تبدیلی پر قابو نہ پایا تو ہیٹ ویو،خشک سالی اور جنگلات کی آگ لگنے کے واقعات بڑھ جائیں گے۔

بورڈیوکس کے اطراف گیرونڈےکےعلاقے میں جنگلات میں لگنے والی آگ سے 20 ہزار ہیکٹر پر کھڑے جنگلات میں آگ لگ گئی تھی۔ 2ہزار فائر فائٹرز نے طیاروں اور ہیلی کاپٹرزکی مدد سے آگ بجھانےکےآپریشن میں حصہ لیا۔ مجموعی طورپر 36 ہزار افراد کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا گیا۔

لینڈیراز کے گاؤں کے اطراف لگنےوالی آگ پر قابو پالیا گیا ہے تاہم آگ کو مکمل طور پر نہیں بجھایا گیا ہے۔

جنگلات کی ان دونوں آگ کو بجھانے میں 25 فائر فائٹرز معمولی زخمی ہوئے تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

france wildfires

Tabool ads will show in this div