خاتون کی لاش ڈھائی سال فلیٹ میں پڑی رہی، پڑوسی اور مالک مکان لاعلم

لاش سڑنے سے موت کی وجہ معلوم نہ ہوسکی

لندن کے فلیٹ میں خاتون کی لاش ڈھائی سال تک پڑی رہی اور اس عرصے میں مالک مکان اور ہمسائے انکی موت سے لاعلم رہے۔

برطانوی اخبار گارڈین کے مطابق خاتون کی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ لاش گل سڑ جانے کی وجہ سے موت کی وجہ کا تعین نہیں ہوسکا، 61 سالہ شیلہ سیلان کی لاش رواں سال فروری میں ڈھائی سال بعد انکے فلیٹ سے ملی تھی۔

لندن کی مقامی عدالت نے خاتون کی موت کی وجوہات جاننے کے لیے کارروائی کا آغاز کیا جس میں معلوم ہوا کہ خاتون کو آخری مرتبہ اگست 2019 میں دیکھا گیا تھا۔ تحقیقات میں یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ مالک مکان اور پولیس نے بہت سے ایسے مواقع چھوڑے جب خاتون کی موت کے بارے میں بروقت علم ہو سکتا تھا۔

ہمسائیوں نے عدالت کو بتایا کہ خاتون سے متعلق ہاؤسنگ ایسوسی ایشن اور پولیس سے بار بار رابطہ بھی کیا گیا تھا لیکن کوئی جواب نہیں مل سکا، خاتون اگست 2019 سے کرایہ نہیں ادا کر رہی تھیں جس کے بعد مالک مکان نے جون 2020 میں گیس کی سپلائی منقطع کر دی تھی۔ میٹروپولیٹن پولیس کے کنٹرولر نے بھی مالک مکان کو غلط معلومات کی بنیاد پر بتایا تھا کہ خاتون کو زندہ دیکھا گیا ہے۔

عدالتی افسر ڈاکٹر جولین مورس نے تحقیقات نمٹاتے ہوئے کہا کہ کوئی بھی موت افسوسناک ہوتی ہے لیکن کسی بھی موت کے متعلق دو سال تک بے خبر رہنا سمجھ سے باہر ہے۔

لندن

women body discovered

Tabool ads will show in this div