فرح خان کیس؛ بزداردور کے ایک درجن سرکاری افسران نیب میں طلب

فرح خان نے مبینہ طور پر ان کے ساتھ مل کر قومی خزانے کو نقصان پہنچایا

قومی احتساب بیورو (NAB) نے فرح خان کیس میں عثمان بزدار دور کے ایک درجن سرکاری افسران کو طلب کرلیا ہے۔

فرح خان کیس میں بڑی پیش رفت سامنے آئی ہے، اورقومی احتساب بیورو (Nab) نے عثمان بزدار دور کے ایک درجن سرکاری افسران کو نیب میں طلب کرلیا ہے۔

ذرائع کے مطابق ان افسران میں سابق ڈی سی لاہور، ساہیوال، فیصل آباد اور گوجرانوالہ کے علاوہ سابق وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے 2 پی ایس او بھی شامل ہیں۔

ذرائع نے بتایا کہ فرح خان نے مبینہ طور پر ان افسران کساتھ مل کر قومی خزانے کو نقصان پہنچایا۔

ذرائع کے مطابق ان افسران کو پیرکونیب لاہورمیں طلب کیا گیا ہے اور ان سے تمام متعلقہ ریکارڈ بھی طلب کیا گیا ہے۔

عثمان بزدار کی سماء سے بات

سماء سے خصوصی بات کرتے ہوئے سابق وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کا کہنا تھا کہ مجھ پر اور میرے خاندان پر متعدد کیسز بنائے گئے، جب کہ میں نے اپنے دور میں تمام معاملات رولز اور قانون کے مطابق چلائے۔

سماء نے سوال کیا کہ آپ کو نہیں لگتا فرح گوگی پر جو الزام ہے وہ وطن واپس آئیں اور ان کا سامنا کریں۔

فرح گوگی کی کرپشن کےبارےمیں سوال کاجواب دینےسےگریز کرتے ہوئے عثمان بزدار نے کہا کہ دیکھیں یہ جس سے متعلق سوال ہے اس سے پوچھیں۔

PTI

USMAN BUZDAR

farha gogi

Tabool ads will show in this div