حکومت کا پیٹرول اور ڈیزل پر ڈیلرز مارجن 3.25 روپے فی لیٹر تک بڑھانے کا فیصلہ

منافع کی شرح میں اضافے کا اطلاق یکم اگست سے ہو گا

حکومت نے پیٹرول اور ڈیزل پر ڈیلرز مارجن 3.25 روپے فی لیٹر تک مزید بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے۔

گزشتہ روز وزرات پٹرولیم اور پٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کے درمیان ہونے والے مذاکرات میں وزارت پٹرولیم نے پیٹرول اور ڈیزل پر ڈیلرز مارجن 7 روپے فی لیٹر مقرر کرنے پر اتفاق کیا تھا۔

اب حکومت نے پیٹرول اور ڈیزل پر ڈیلرز مارجن 3.25 روپے فی لیٹر تک مزید بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے۔

منافع کی شرح میں اضافے کا اطلاق یکم اگست سے ہوگا۔ اور پیٹرول اور ڈیزل پر ڈیلرز مارجن کی نئی شرح کے اطلاق سے قبل وفاقی کابینہ سے حتمی منظوری لی جائے گی۔

واضح رہے کہ اس وقت پیٹرول پر ڈیلرز مارجن 4 روپے اور ڈیزل پر 3.75 روپے فی لٹر ہے، اور مارجن بڑھانے کے لئے ڈیلرز ایسوسی ایشن نے 18 جولائی کو ہڑتال کی دھمکی بھی دے رکھی تھی۔

وزرات پٹرولیم اور پٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کے درمیان مذاکرات

گزشتہ روز وزرات پٹرولیم اور پٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کے درمیان مذاکرات کامیاب ہوگئے تھے اور پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن نے ہڑتال کی کال واپس لے لی تھی۔

مذاکرات وزیر مملکت براۓ پیٹرولیم مصدق ملک کی سربراہی میں پی ایس او ہیڈ آفس کراچی میں ہوٸے، جس میں شاہد خاقان عباسی اور وفاقی سیکریٹری برائے پیٹرولیم ظفر علی بھٹہ، پی ایس او کی اعلی انتظامیہ، چیئرمین اوگرا، چیئرمین او سی اے سی اور دیگر آٸل مارکیٹنگ کمپنیز کے نمائندوں نے بھی شرکت کی۔

پیٹرولیم ڈیلرز ایسو سی ایشن کی جانب سے ملک بھر میں پیٹرولیم مصنوعات کی فراہمی معمول کے مطابق جاری رکھنے کا اعلان کیا گیا اور حکومت نے پیٹرول اور ڈیزل پر فی لیٹر ڈیلر مارجن میں اضافے کا مطالبہ مان لیا تھا۔

petroleum prices

Petroleum Minister

Tabool ads will show in this div