گلگت بلتستان : گلاف کی خطرناک ویڈیو سامنے آگئی

برفانی جھیلیں پھٹنے کا سلسلہ جاری

گلگت بلتستان میں رواں سال برفانی جھیلیں پھٹنے کے واقعات میں شدید اضافہ ہوا ہے، جہاں گلاف پھٹنے کی خطرناک ویڈیو بھی منظر عام پر آگئی ہے۔

واقعہ گلگت بلتستان کے علاقے حراموش ویلی میں پیش آیا، جہاں سیلابی پانی گھروں کے ساتھ بہتا رہا، خوش قسمتی سے واقعہ میں کوئی جانی اور مالی نقصان نہیں ہوا۔ جاری کی گئی ویڈیو میں برفانی جھیل کا سیلاب پہاڑ سے تیزی کے ساتھ نیچے آتا دیکھا جاسکتا ہے۔

واضح رہے کہ محکمہ موسمیات کی جانب سے گلگت بلتستان میں گلوف کا ایک اور الرٹ جاری کیا گیا ہے، گلوف کے نتیجے میں سیلاب اور لینڈ سلائیڈنگ کا خطرہ ہے۔ جاری الرٹ کے مطابق گلگت بلتستان کے علاقے اسکردو، گھانچے، کارمنگ، شگر اور استور میں گلوف کے باعث بڑے پیمانے پر نقصان کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے۔

قبل ازیں مئی کے مہینے میں بھی محکمہ موسمیات کی جانب سے گلوف کا الرٹ جاری کیا گیا تھا، جس کے بعد شیشپر گلیشیئر پر بننے والی جھیل پھٹنے کے بعد سیلابی صورت حال سے گلگت اور ہنزہ کو آپس میں ملانے والے حسن آباد پل پانی کا دباؤ برداشت نہ کرنے کے باعث ٹوٹ گیا تھا، جس کے بعد شاہراہ قراقرم کو ٹریفک کیلئے بند کردیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ محکمہ موسمیات پاکستان کے مطابق اس سال اپریل کا ماہ سال 1961 کے بعد سب سے گرم ترین ماہ رہا۔ مارچ اور اپریل کے ماہ اوسط سے تقریباً پانچ ڈگری زیادہ گرم رہے۔

بین الاقوامی ادارے مرکز برائے مربوط تربیتی پہاڑی علاقہ جات (آئی سی آئی ایم او ڈی) کے مطابق گرمی کی شدت میں اضافے کی وجہ سے گلیشیئرز زیادہ تیزی سے پگھل رہے ہیں۔

خیال رہے کہ پاکستان 3 بڑے اور بلند ترین پہاڑی سلسلوں ہمالیہ، ہندوکش اور قراقرم کے سنگم کا حامل ہے۔ لہذا قطبین کے بعد سب سے زیادہ گلیشیرز ہمارے اِن ہی سلسلوں میں پائے جاتے ہیں۔ ہمارے اِن پہاڑی سلسلوں میں موجود گلیشیرز کی کل تعداد 7,253 ہے۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ مگر اب گلوبل وارمنگ یعنی بڑھتی ہوئی حدت اِن گلیشیروں پر بھی اثر انداز ہونا شروع ہوچکی ہے۔ گرمی سے گلیشیرز کے پگھلنے کی رفتار پہلے سے بڑھ چکی ہے۔ لہذا اِن سے رسنے والا پانی بھی بڑھ چکا ہے جس کے باعث قرب و جوار میں واقع کئی گلیشیائی جھیلوں میں پانی کی زیادتی ہو رہی ہے۔

گلوف کیا ہوتا ہے

بڑھتے ہوئے پانی کا زور بعض اوقات اِن جھیلوں کے کناروں میں شگاف ڈالنے لگا ہے اور یہ جھیلیں چھلکنے لگی ہیں اور اگر پانی کا بہاؤ تیز ہو تو اِس پانی کے ساتھ برفانی تودے اور پتھر بھی لڑھکنے لگتے ہیں جو نشیب کے علاقوں کے لیے انتہائی تباہ کن ثابت ہوسکتے ہیں۔ اِس عمل کو گلیشیائی جھیلوں میں سیلاب یعنی ( گلیشیئل لیک آؤٹ برسٹ فلڈ) یعنی گلوف کہا جاتا ہے۔

weather

GILGIT BALTISTAN

Monsoon Rain

GLOF

Tabool ads will show in this div