امریکا سے دوستی چاہتے ہیں لیکن غلامی نہیں، عمران خان

ضمنی الیکشن میں منحرف اراکین کو جتوانے کی کوشش کی جارہی ہے، چیئرمین پی ٹی آئی

عمران خان کا کہنا ہے کہ ضمنی الیکشن میں انہیں (منحرف اراکین کو) جتوانے کی کوشش کی جارہی ہے، پاکستان ان چوروں کی وجہ سے عظیم اور خوددار ملک نہیں بن سکا، ہم بھی چاہتے ہیں کہ امریکا سے دوستی ہو لیکن غلامی نہیں چاہتے۔

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان کا شیخوپورہ جلسے سے خطاب میں کہنا ہے کہ چند افراد کے ساتھ 26 سال قبل سیاست کا آغاز کیا، آج تحریک انصاف پاکستان کی سب سے بڑی جماعت بن چکی ہے، ضمنی انتخابات میں تحریک انصاف کے امیدوار کا مقابلہ کوئی بھی لوٹا نہیں کرسکتا کیوں کہ لوٹوں میں جنون نہیں ہوتا، ان پر صرف نوٹ خرچ کیا جارہا ہے لیکن ٹیم بن کر نکلو تو کوئی تحریک انصاف کے کارکنوں اور امیدواروں کو نہیں ہرا سکتا۔

ان کا کہنا ہے کہ الیکشن کمیشن پوری طرح جانبدار ہے جو حمزہ شہباز کے ساتھ ملکر لوٹوں کو الیکشن جتوانے کی کوشش کررہا ہے لیکن حمزہ شہباز سن لے کہ پاکستان کے عوام فیصلہ کرچکے ہیں کہ امپورٹڈ حکومت، امریکی سازش اور پاکستان کے تمام لوٹے نامنظور ہیں۔

سابق وزیراعظم نے موجودہ حکومت کی غلط پالیسیوں پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ مہنگائی کے باعث کسان بہت پریشان ہے اور ڈیزل کی قیمت میں اضافے کی وجہ سے صنعتیں بری طرح متاثر ہورہی ہے، مغربی بینکوں اور آف شور کمپنیوں میں ان چوروں کے پیسے ہیں جنہیں بچانے کیلئے یہ این آر او لے رہے ہیں۔

عمران خان نے دعویٰ کیا کہ آصف زرداری اور شریف خاندان اپنے پیسے کو بچانے کیلئے اسرائیل کو تسلیم کرنے اور کمشیریوں کی قربانیوں کو نظر انداز کرکے بھارت کو خوش کرنے کو بھی تیار ہیں، یہ ایک مرتبہ پھر امریکا کی جنگ میں شامل ہونے کو تیار ہیں تاکہ اپنا پیسہ بچا سکیں، زرداری اور نواز شریف کے دور حکومت میں امریکا نے پاکستان میں 400 ڈرون حملے کئے دنیا کے کسی ملک کا قانون اس طرح حملے کرنے کی اجازت نہیں دیتا۔

انہوں نے موجودہ حکومت کو امپورٹڈ حکومت قرار دیتے ہوئے کہا کہ آج پاکستان خود دار ملک نہیں بن سکا تو ان چوروں کی وجہ سے جو خود کو بھکاری کہتے ہیں، میں بھی امریکا سے دوستی کرنا چاہتا ہوں مگر کسی صورت غلامی قبول نہیں، اسی طرح بھار ت سے بھی دوست اور اچھے تعلقات چاہتے ہیں مگر کشمیریوں کا لہو بیچ کر نہیں، اگر کشمیریوں پر ظلم ہورہا ہے تو میں کبھی بھارت سے دوستی نہیں چاہوں گا۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے مزید کہا کہ امریکا کون ہوتا ہے ہمیں روس سے تیل کی خریداری سے روکنے والا، بھارت تو امریکا کا اتحادی ہے اس کے باوجود بھارت اپنے لوگوں کو ریلیف دینے کیلئے روس سے 30 سے 40 فیصد سستا تیل خرید رہا ہے لیکن امریکی غلام چیری بلاسم نے روس سے تیل خریدنے کی جرأت ہی نہیں کی کیونکہ امریکا کا نام سن کر ان کی ‘‘کانپیں ٹانگنے’’ لگ جاتی ہیں۔

عمران خان کا کہنا ہے کہ اگر امریکا میں کوئی شخص ضمانت پر ہو تو اسے وہاں چپڑاسی بھی نہیں رکھا جاتا لیکن ہمارے ملک میں ایک مجرم کو مسلط کرکے وزیراعظم بنادیا گیا۔

IMRAN KHAN

PUNJAB BYE ELECTION

Tabool ads will show in this div