افغانستان کے ‘صوفی بابا’ بھارت میں قتل

روحانی پیشوا خواجہ سید چشتی کئی سال سے مہاراشٹرا میں مقیم تھے

افغانستان سے تعلق رکھنے والی مذہبی و روحانی شخصیت خواجہ سید چشتی عرف صوفی بابا کو بھارت کی ریاست مہاراشٹرا میں فائرنگ کرکے قتل کردیا گیا۔

بھارت کی نیوز ویب سائٹ این ڈی ٹی وی کے مطابق 35 سالہ خواجہ سید چشتی ‘صوفی بابا’ کے نام سے جانے جاتے تھے، انہیں ممبئی سے تقریباً 200 کلومیٹر دور فائرنگ کرکے قتل کیا گیا۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ سید محمد چشتی کو سر میں گولی ماری گئی، جس کے باعث وہ موقع پر ہی دم توڑ گئے۔

مقامی پولیس افسر نے بتایا کہ عینی شاہدین کی گواہی پر سید چشتی کے ڈرائیور کو حراست میں لے کر پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔

پولیس کے مطابق سید چشتی ناسک کے قصبے یے وولا میں کئی برسوں سے مقیم تھے، قتل کی وجہ تاحال معلوم نہیں ہوسکی۔

پولیس نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ سید چشتی کو زمین کے ایک پلاٹ کے معاملے پر قتل کیا گیا جو انہوں نے مقامی لوگوں کی مدد سے حاصل کیا تھا لیکن وہ افغانستان کے شہری ہونے کی وجہ سے بھارت میں جائیداد خریدنے کا قانونی حق نہیں رکھتے تھے۔

انڈیا

افغانستان

SOFI BABA

Tabool ads will show in this div