حج اکبر1443 ہجری کا خطبہ کس نے دیا ؟

ڈاکٹرشیخ محمد بن عبدالکریم العیسیٰ نے حج 1443 ہجری کا خطبہ مسجد نمرہ میں دیا۔

سعودی فرمانروا سلمان بن عبدالعزیز آل سعود نے ڈاکٹر شیخ محمد بن عبدالکریم العیسیٰ کے نام کی منظوری دی۔

شیخ محمد بن عبدالکریم کون ہیں ؟

شیخ محمد سیاست دان ،مسلم ورلڈ لیگ کے سیکرٹری جنرل ، بین الاقوامی اسلامی حلال تنظیم کے صدراورسابق سعودی وزیرانصاف کے عہدے پر بھی رہے ۔

ڈاکٹر محمد بن عبدالکریم کو متعدد ملکی اور غیر ملکی ایوارڈز سے نوازا گیا ہے ۔ وہ مذاہب کے مابین روابط اورمکالوں کو پیش کیے جانے ، شدت پسندی اورمختلف مذاہب میں نفرت انگیزی کے خلاف آواز اٹھانے کے حوالے سے بھی جانے جاتے ہیں ۔

2020 میں ڈاکٹر شیخ محمد بن عبدالکریم کا نام دنیا کے 500 باثر مسلمانوں میں شامل تھا ۔

ڈاکٹرعیسیٰ نے امریکہ ، یورپ ، افریقہ اور ایشیا میں مختلف مذاہب سے تعلق رکھنے والی مذہبی وسیاسی شخصیات سے ملاقات کیں۔ مذاہب کے مابین بہتر تعلقات کو فروغ دینے کے لئے بھی انہوں نے اپنی خدمات پیش کیں۔

گذشتہ برس سعودی فرمانزوا نے حج 1442 ہجری کا خطبہ دینے کے لئے مسجد الحرام کے خطیب ڈاکٹر بند بلیلہ کومقررکردیا تھا۔

  ڈاکٹر بندر بلیلہ
ڈاکٹر بندر بلیلہ

خطبہ کے مبلغین

43 برسوں کے دوران آٹھ شیوخ اورعلماء نے مسجد نمرہ سے خطبہ حج دیا۔ 1402 ہجری سے 1436 ہجری تک الشیخ عبدالعزیز بن عبداللہ بن محمد آل الشیخ اور الشیخ عبدالرحمان بن عبدالعزیز السدیس نے خطبہ حج پیش کیے۔ یہ طویل عرصے تک خطبہ دینے والے خطیب مقرر رہے جنہوں سے 32 برس تک حج کا خطبہ دیا۔

HAJJ 2022

ZUL HAJJ

Tabool ads will show in this div