عدالت نے حلیم عادل شیخ کی گرفتاری غیر قانونی قرار دے دی

حلیم عادل شیخ کو محکمہ اینٹی کرپشن نے لاہور سے گرفتار کیا تھا

لاہور ہائی کورٹ نے سندھ اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حلیم عادل شیخ کی گرفتاری غیر قانونی قرار دے دی۔

عدالت نے محفوظ فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ گرفتاری کا کوئی لیٹر پیش نہیں کیا گیا۔ لاہور ہائیکورٹ نے حلیم عادل شیخ کو رہا کرنے کا حکم دے دیا۔

دوران سماعت عدالت کے استفسار پر حلیم عادل شیخ نے کہا کہ میں گزشتہ روز کراچی سے لاہور پہنچا تھا، میں کراچی کے مسائل پر آواز بلند کرتا رہتا ہوں، مجھ پر مقدمات درج کرتے رہتے ہیں، میں ضمانت کروانا چاہتا ہوں اور بچوں کے ساتھ عید کرنا چاہتا ہوں۔

حلیم عادل شیخ لاہور کے ایم ایم عالم روڈ پر واقع ایک ہوٹل میں مقیم تھے، سی سی ٹی وی فوٹیج کے مطابق بدھ کی علی الصبح ہوٹل کے سامنے ایک ڈبل کیبن پک اپ پہنچی، گاڑی میں سوار 6 افراد ہوٹل میں داخل ہوئے اور چند منٹ بعد حلیم عادل کو لے کر ہوٹل سےباہر نکل گئے۔

شرجیل میمن نے کہا ہے کہ حلیم عادل شیخ کو اینٹی کرپشن سندھ نے گرفتارکیا ہے، زمینوں پر قبضے کرنے والوں کے خلاف اینٹی کرپشن کو کارروائی کا اختیارہے۔

صوبائی وزیر نے کہا تھا کہ حلیم عادل کی گرفتاری سے حکومت کا کوئی لینا دینا نہیں ہے، مختلف معاملات پر جواب کے لیے بھیجے گئے خطوط کاجواب نہ ملنے پر حلیم عادل کی گرفتاری عمل میں آئی۔

haleem adil shaikh

Tabool ads will show in this div