اسلام آباد ہائیکورٹ نے صحافی عمران ریاض کی گرفتاری کا نوٹس لے لیا

صحافی عمران ریاض کی گرفتاری پر اسلام آباد پولیس سے وضاحت طلب

اسلام آباد ہائیکورٹ نے اینکرپرسن عمران ریاض خان کی گرفتاری پر آئی جی اسلام آباد کے مجاز افسر کو صبح 10 بجے طلب کرلیا۔

عمران ریاض کی گرفتاری پر توہین عدالت کیس کی سماعت آج صبح 10 بجے ہوگی، عدالت کا کہنا ہے کہ آئی جی اسلام آباد وضاحت کرے کہ عدالتی حکم عدولی کیوں ہوئی۔

واضح رہے کہ پنجاب پولیس نے ٹی وی اینکر عمران ریاض خان کو گرفتار کرلیا۔ اٹک پولیس کا کہنا ہے کہ عمران ریاض خان کو تھانے منتقل کردیا گیا۔

صوبائی وزیر قانون ملک احمد خان نے عمران ریاض خان کی گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ صحافی عمران ریاض خان کیخلاف حسن ابدال میں مقدمہ درج ہے، انہیں پنجاب کی حدود سے ہی گرفتار کیا گیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ کہنا غلط ہے کہ صحافی کو اسلام آباد سے گرفتار کیا گیا، عمران ریاض خان کو ضلع اٹک، راولپنڈی ڈویژن سے گرفتار کیا گیا۔

واضح رہے کہ عمران ریاض خان نے سابق وزیراعظم عمران خان کی حکومت کے خاتمے پر کڑی تنقید کی تھی، جس کے بعد ان کیخلاف کئی مقدمات بھی درج کئے گئے۔

نجی ٹی وی سے گفتگو میں عمران ریاض خان کا کہنا تھا کہ مجھے اسلام آباد انٹرچینج سے گرفتار کیا جارہا ہے، چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ جسٹس اطہر من اللہ ہدایت کرچکے ہیں کہ گرفتاری نہیں کی جاسکتی، گرفتاری کا تجربہ کرنا ہے تو کرلیں میں تیار ہوں۔

ISLAMABAD HIGH COURT

islamabad police

IMRAN RIAZ KHAN

Tabool ads will show in this div