کورونا وائرس امریکا کی لیبارٹری میں تیار ہوا، امریکی پروفیسر کا دعویٰ

جیفری ساکس کورونا وائرس کی وبا پر دو سال سے تحقیق کررہے تھے

امريکا کے نامور معيشت دان پروفیسر جیفری ساکس نے دعویٰ کیا ہے کہ کورونا وائرس چین سے نہیں بلکہ امریکی تجربہ گاہ سے نکلا تھا۔

امریکی پروفیسر جیفری ساکس کے مطابق وائرس امریکا کی بائیو ٹیکنالوجی لیب میں تیار کیا گیا۔ پروفیسر جیفری ساکس کورونا وائرس کی وبا پر دو سال سے تحقیق کررہے تھے۔

یہ وائرس پھیلانے کے حوالے سے امریکا اور چین ایک دوسرے پر الزامات لگاچکے ہیں۔ چين ووہان شہر ميں ليب سے وائرس ليک ہونے کی خبروں کی سختی سے ترديد کرچکا ہے۔

دوسری جانب امریکا، برطانيہ اور آسٹریلیا کے سائنسدانوں کے تحقیقی پیپرز میں کہا گیا ہے کہ ابھی تک ایسی کوئی شہادت نہیں ملی کہ کورونا وائرس کسی لیبارٹری کا تیار کردہ ہے اور نہ ہی اس کا کوئی ووہان لیب سے لنک ہے۔

CHINA

AMERICA

COVID-19

ajaz Ahmed Jul 05, 2022 09:52pm
Good luck
Tabool ads will show in this div