شہروز کاشف نے خونی چوٹی نانگا پربت کو سر کرلیا

شہروز کاشف نے آج 5 جولائی کو چوٹی سر کی

پاکستانی کوہ پیما شہروز کاشف نے نانگا پربت بھی سر کرکے ایک اور ریکارڈ اپنے نام کرلیا۔

شہروز کاشف نے آٹھ ہزار ایک سو چھبیس میٹر کی نانگ پربت چوٹی سر کی۔ جس کے بعد شہروز کاشف نانگا پربت سر کرنے والے دنیا کے سب سے کم عمر کوہ پیماء بن گئے ہیں۔

کوہ پیما شہروز کاشف نے پاکستانی وقت کے مطابق آج بروز منگل 5 جولائی کو صبح 8:54 پر نانگا پربت چوٹی سر کی۔ لاہور سے تعلق رکھنے والے 20 سالہ شہروز نے 8000 میٹر سے بلند آٹھویں چوٹی سر کی ہے۔ انہوں نے کوہ پیمائی کا آغاز 11 برس کی عمر میں کیا۔

شہروز کاشف 8 ہزار میٹر بلند دنیا کی تمام 14چوٹیاں سر کرنے کا عزم رکھتے ہیں۔ خیال رہے کہ شہروز کاشف 5 بلند ترین چوٹیاں سر کرنے والے پاکستان کے کم عمر ترین کوہ پیما ہیں۔

کوہ پیما شہروز کاشف کو 2 گینیز ورلڈ ریکارڈ کے سرٹیفکیٹ مل چکے ہیں، انہیں 2 بلند ترین چوٹیاں سر کرنے پر سرٹیفکیٹ دیئے گئے تھے۔

شہروز کاشف بلند ترین چوٹی ماؤنٹ ایورسٹ اور دوسری بلند ترین چوٹی کے ٹو سر کرنے والے کم عمر ترین کوہ پیما ہیں۔

انہوں نے تین بڑے پہاڑوں کو صرف 23 دن کی مدت میں سر کیا جن میں کینچنجنگا، لھوٹسے اور مکالو شامل ہیں۔ انہوں نے ماونٹ ایوریسٹ 8849 میٹر، کے ٹو 8611 میٹر، کینچنجنگا 8586 میٹر لھوٹسے 8516 میٹر کو عبور کرنے میں کامیابی حاصل کی۔

ان کی شاندار خدمات پر اسپورٹس بورڈ پنجاب نے انہیں پنجاب کا یوتھ ایمبیسڈر بھی مقرر کررکھا ہے۔

واضح رہے کہ دنیا میں 8 ہزار میٹر سے زیادہ بلند 14 پہاڑی چوٹیاں موجود ہیں۔ 8 ہزار میٹر سے اونچی 8 چوٹیاں سر کرنے کا اعزاز پاکستان کے محمد علی سد پارہ کے نام ہے۔

یاد رہے کہ رواں سال فروری میں سردیوں کے دوران کےٹو سرکرنے کے دوران محمد علی سدپارہ اور انکے تین ساتھی لاپتہ ہوگئے تھے۔

جس کے بعد پاکستانی افواج نے ریسکیو آپریشن شروع کیا تاہم 12 دن جاری رہنے والے آپریشن میں سدپارہ کی لاش نہیں مل سکی تھی اور 18فروری کو آپریشن ختم کرنےکا اعلان کردیا گیا تھا۔

CLIMBER

Nanga Parbat

SHEHROZ KASHIF

Tabool ads will show in this div