تہران میں ریت کے طوفان کے باعث تعلیمی ادارے اور دفاتر بند

ماہرین کے مطابق یہ رجحان موسمیاتی تبدیلیوں سے جڑا ہوا ہے

ایران کے درالحکومت تہران میں ریت کے شدید طوفان کے بعد پیر کے روزسرکاری دفاتر، عدالتیں، اسکول اور یونیورسٹیاں بند کردی گئی۔

ایران کے سرکاری خبررساں ادارے کے مطابق صوبہ تہران کی ہنگامی کمیٹی برائے فضائی آلودگی نے شہر میں گردوغبار پھیلنے کی وجہ سے آج تمام انتظامی دفاتر اورسرکاری تعلیمی ادارے بند کرنے کا حکم دیا ہے۔

عرب نیوز کے مطابق 80 لاکھ سے زیادہ نفوس پر مشتمل آبادی والے شہر تہران میں ہر طرف دھول ہی دھول تھی اور حدِ نگاہ انتہائی محدود تھی۔

دارالحکومت کے مغرب میں واقع پڑوسی صوبہ البرز میں بھی حکام نے تمام دفاتر، بینکوں اور سائنسی اور تعلیمی مراکز کو بند کرنے کا اعلان کیا ہے۔

واضح رہے کہ یہ خطہ ہمیشہ ریت کے طوفانوں سے متاثررہا ہے لیکن حالیہ برسوں میں دھول کے بادل عام اور شدید ہو گئے ہیں۔

ماہرین کے مطابق یہ رجحان موسمیاتی تبدیلیوں سے جڑا ہوا ہے جو جنگلات کی کٹائی کے ساتھ ساتھ دریائی پانی اور مزید ڈیموں کے زیادہ استعمال کی وجہ سے ریت اور گردآلود طوفانوں میں اضافہ ہورہا ہے۔

Iran

Sandstorm

Tabool ads will show in this div