ہنزہ : فرانسیسی پیرا گلائیڈر کی تلاش کے لیے سرچ آپریشن شروع

ضلعی انتظامیہ کے ساتھ فوج بھی سرچ آپریشن میں حصہ لے رہی ہے

ہنزہ کی دلکش وادی میں ایک فرانسیسی پیرا گلائیڈر کی تلاش کے لیے سرچ اینڈ ریسکیو آپریشن شروع کر دیا گیا ہے۔

گزشتہ ایک ماہ سے ہنزہ میں پیراگلائیڈنگ کرنے والی ٹیم کا ایک رکن ہفتے کی شام ہنزہ کے مشہور پہاڑی سلسلے لیڈی فنگر کے قریب پیراشوٹ سے چھلانگ لگانے کے بعد لاپتہ ہو گیا تھا۔

فرانس سے تعلق رکھنے والے 57 سالہ زیویر کی تلاش کے لیے ضلعی انتظامیہ کے ساتھ فوج بھی سرچ آپریشن میں حصہ لے رہی ہے۔

الپائن کلب آف پاکستان کے کرار حیدری کا کہنا ہے کہ فرانسیسی پیرا گلائیڈر ساول زیویئر گزشتہ ماہ کے آخر میں ہنزہ پہنچا تھا۔

ہفتہ کی شام تقریباً 4 بجے تین پیرا گلائیڈرز نے ڈوئکر میں ایک اونچے مقام سے چھلانگ لگا دی۔دو ہسپانوی پیرا گلائیڈرز ہنزہ سے ملحقہ نگر کی گنیش وادی میں بحفاظت اترے تاہم زیویئر نظر نہیں آیا۔

پولیس اور مقامی رضاکار جائے وقوعہ پر پہنچے اور تلاش شروع کی لیکن پیرا گلائیڈر کا کوئی سراغ نہیں ملا۔

کرار حیدری نے کہا کہ اب فوج کا ایک ہیلی کاپٹر لاپتہ پیرا گلائیڈر کی تلاش اور بچاؤ کی کوششوں میں شامل ہو گیا ہے۔

خیال رہے کہ پاکستان کا کم آبادی والا خطہ گلگت بلتستان میں چند سرفہرست چوٹیوں اور ایک اہم سیاحتی مقام ہے جہاں ایڈونچر کے متلاشیوں کے لیے ایک خاص کشش ہے۔

سیاحوں کی ایک بڑی تعداد ہر سال مختلف چوٹیوں، پیرا گلائیڈنگ اور دیگر کھیلوں کی مہمات کے لیے اس خطے کا رخ کرتی ہے۔

اس سال ریکارڈ 1,400 کوہ پیماؤں نے دنیا کی دوسری بلند ترین چوٹی کے ٹو کو سر کرنے کے لیے اس علاقے کا سفر کیا۔

GILGIT BALTISTAN

HUNZA

Tabool ads will show in this div