کراچی: آگ سے متاثرہ عمارت گرنے کا امکان نہیں، قابل مرمت ہے، ماہرین

این ای ڈی یونیورسٹی نے اپنی رپورٹ ایس بی سی اے میں جمع کرادی

این ای ڈی یونیورسٹی کراچی کے ماہرین کی ٹیم نے ایس بی سی اے میں جمع کرائی گئی اپنی رپورٹ میں سینٹرل جیل کے قریب ڈپارٹمنٹل اسٹور میں آگ لگنے سے متاثرہ عمارت کے ڈھانچے کے گرنے کے امکان کو مسترد کردیا۔

این ای ڈی یونیورسٹی کے ماہرین نے کراچی میں جیل چورنگی پر آتشزدگی کا نشانہ بننے والی عمارت کے معائنے کے بعد اپنی رپورٹ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کو جمع کرادی۔

این ای ڈی یونیورسٹی کی جانب سے ایس بی سی اے کو جمع کرائی گئی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ آگ سے عمارت کی بنیادوں کو کوئی نقصان نہیں پہنچا۔

وائس چانسلر این ای ڈی یونیورسٹی ڈاکٹر سروش حشمت لودھی نے نمائندہ سماء سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عمارت کے کچھ ستونوں کو مضبوط کرنا ہوگا، اسٹرکچر انجینئر کے ذریعے مرمت کرانا ہوگی، مرمتی کام مکمل کرنے میں 4 ماہ لگیں گے۔

وی سی این ای ڈی یونیورسٹی کا کہنا ہے کہ عمارت کا جائزہ لیا، 450 میں سے 165 کالم زیادہ متاثرہوئے، اچھی بات یہ ہے کہ عمارت کی بنیاد متاثر نہیں ہوئی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ این ای ڈی کا کردار اس معاملے میں ایک ٹیسٹنگ لیبارٹری کا ہے، بیسمینٹ کے بیم، کالم، سلیب اور بنیاد کی ٹیسٹنگ کرکے رپورٹ ایس بی سی اے کو بھیج دی ہے، آگ سے جو کالم متاثر ہوئے ہیں، ان کی قوت آدھی رہ گئی ہے، ٹیسٹنگ کے بعد اب انجینئر کالمز کی قوت دوبارہ 100 فیصد کرنے پر کام کررہے ہیں۔

سروش حشمت لودھی کا کہنا ہے کہ کالمز میں جو بھی خرابی آئی ہے اسے دور کیا جائے گا، اس کی تکنیک موجود ہے، آگ کے بعد کی صورتحال کی وجہ سے نمونے لینے میں 8 دن لگے، مرمت کے بعد عمارت رہائش کے قابل ہوجائے گی۔

واضح رہے کہ کراچی کے علاقے جیل چورنگی پر واقع کثیر المنزلہ رہائشی عمارت کے گراؤنڈ فلور اور تہہ خانے میں قائم ڈپارٹمنٹل اسٹور میں 2 جون کو آگ لگ گئی تھی، جسے بجھانے میں فائر بریگیڈ انتظامیہ کو کئی دن لگے تھے، واقعے میں ایک شخص جاں بحق اور 3 افراد زخمی ہوئے تھے۔

کراچی

پاکستان

Tabool ads will show in this div